نواز شریف کی حکومت آنے کے بعد بھی فوری ریلیف ممکن نہیں ، مفتاح اسماعیل نے اعتراف کرلیا

نواز شریف کی حکومت آنے کے بعد بھی فوری ریلیف ممکن نہیں ، مفتاح اسماعیل نے ...
نواز شریف کی حکومت آنے کے بعد بھی فوری ریلیف ممکن نہیں ، مفتاح اسماعیل نے اعتراف کرلیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن ) مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ خطے میں بجلی اور گیس کی قیمتیں پاکستان میں سب سے زیادہ ہیں ، جادو کی چھڑی کسی کے پاس بھی نہیں ، نواز شریف کی حکومت یا مسلم لیگ ن کی حکومت آنے کے بعدبھی حالات راتوں رات درست نہیں ہوں گے ۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ مہنگائی کی وجہ صرف عمران خان خود ہیں ، مہنگائی کی دو وجوہات ہیں، ایک وجہ خود حکمران ہیں جنہوں نے روپے کی قدر میں جان بوجھ کر کمی کی ،کہتے ہیں کہ روپے کی قدر میں کمی آئی ایم ایف سے ڈیل کیلئے کی ، یہ مہنگائی بڑھنے کی بنیادی وجہ ہے ۔ دوسری وجہ پٹرول گیس کی قیمتوں میں اضافہ ہے ، ہمارے دور میں پٹرول عالمی مارکیٹ میں 118ڈالر فی بیرل تک بھی پہنچا تھا آج تو صرف83 روپے ہے ، ہم نے اپنے دور میں پٹرول 116روپے سے اوپر نہیں جانے دیا ، یہ 137سے بھی اوپر لے گئے ۔ شوکت ترین نے آئی ایم ایف سے مذاکرات کئے ہیں مگر یاد رکھیں ہم پٹرول کی قیمت میں ایک پیسے کا اضافہ نہیں دیں گے ، ہم سڑکوں پر آرہے ہیں ۔ مالی سے گاڑی چلوائیں تو باغ اور گاڑی دونوں تباہ ہوں گے ، یہ عمران خان کی مثال ہے ۔

مفتاح اسماعیل نے کہا کہ نواز شریف کی حکومت میں ٹیکس کی شرح 11.1فیصد تھی ، یہ 9.1فیصد پر لے آئے ، جو اب 8.1فیصد پر جا رہی ہے ، آئی ایم ایف ان سے کہتی ہے کہ نواز شریف کے بابر ٹیکس لے کر آئیں، یہ لوگ وہاں پر ٹیکس نہیں لاپاتے تو پٹرول مہنگا کر دیتے ہیں ، اس وقت خطے میں سب سے زیادہ مہنگی بجلی اور گیس پاکستان میں ہے ، حکومت نے وزراءکی فوج پال رکھی ہے ، کابینہ میں 50 کے لگ بھگ وزیر ہیں وہ بتائیں کہ بھارت ، بنگلہ دیش میں بجلی گیس کتنے کی مل رہی ہے ۔ بھارت ایل این جی کتنے کی لے رہا ہے ۔

مفتاح اسماعیل نے کہا کہ قطر سے معاہدہ آج بھی پاکستان کو بچا رہا ہے اگر وہ نہ ہوتا تو پاکستان میں ہر جگہ اندھیرا ہوتا، ہم نے ایل این جی دس ڈالر میں خریدی ، عمران کی پچیس ڈالر کی ہے ، انہوں نے 8کارگو کے سودے کئے مگر ایک بھی بِڈ نہیں آئی ، نومبر دسمبر میں بجلی کم ہوگی اور مہنگی بنے گی ، گیس کا بحران بھی ہوگا،عمران خان کی بجلی اور گیس مہنگائی ہے ۔انہوں نے بجلی بھی مہنگی کردی اور سرکلر ڈیڈ بھی بڑھا دیں ، ہمارے دور میں سوئی گیس کے اداروں میں کمپنیاں ڈیفالٹر نہیں تھیں ، آج گیس کمپنیاں نقصان کر رہی ہیں ، حکومت کی اپنی پانچ گیس اینڈ آئل کمپنیاں ہیں مگر سٹاک مارکیٹ میں ان کی قیمتیں پچاس فیصد سے گر گئی ہیں ۔عمران خان نے قوم کو ہر جگہ غریب کیا ہے ، ہمارے اوپر 60 فیصد قرض بڑھا ہے ،مئی سے اب تک پاکستانی کرنسی 12فیصد گری ہے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -سیاست -