میلسی،نئی نویلی سڑک بیٹھ گئی،منصوبے میں کرپشن کاانکشاف

میلسی،نئی نویلی سڑک بیٹھ گئی،منصوبے میں کرپشن کاانکشاف

  

میلسی(نامہ نگار)کروڑوں روپے کی تعمیر شدہ سڑک ناقص مٹیریل۔کی بنا پر "بیٹھ "گئی۔میلسی ملتان روڈ ون وے 23کروڑ روپے کے منصوبے میں کرپشن کا انکشاف  ہوا ہے کرپٹ افسران کی ملی بھگت سے ٹھیکیدار نے ناقص میٹریل لگا کر سڑک کی تعمیر شروع کی لیکن روڈ مکمل ہونے سے قبل ہی سڑک جگہ جگہ سے بیٹھ گئی شہریوں کا شدید احتجاج تفصیل کے(بقیہ نمبر13صفحہ6پر)

 مطابق  میلسی ملتان روڈ 4 کلو میٹر ون وے کارپٹ روڈ کی 23 کروڑ روپے کی گرانٹ منظور ہوئی اور محکمہ پبلک ہیلتھ انجینئرنگ کی زیر نگرانی روڈ کی تعمیر شروع کی گئی پنجاب میں عثمان بزدار کی حکومت کے خاتمے سے قبل اس روڈ پر کام کا آغاز ہوا اور  ایس ڈی او سمیت دیگر افسران نے ملی بھگت کرتے ہوئے ٹھیکیدار کو ناقص میٹریل کے استعمال کی کھلی چھوٹ دئیے رکھی جس نے افسران کی چھتری کی وجہ سے کھل کر کرپشن کی اس دوران ایک کلومیٹر کا ایک ٹکڑا روڈ مکمل کیا بعدازاں صوبائی حکومت کی تبدیلی کے دوران کام بند رہا اب دوبارہ پی ٹی آئی کی حکومت نے اس منصوبے کی تکمیل کیلئے فنڈز جاری کئے ہیں اوردوبارہ کام شروع کیا گیا ہے لیکن اب بھی دھڑلے سے ناقص میٹریل استعمال کیا جارہا ہے اور کارپٹ روڈکیلئے منظور شدہ تارکول اور بجری کی بجائے سب سٹنڈرڈ میٹریل لگایا جارہا ہے دلچسپ امر یہ ہے کہ اس سڑک کی تکمیل سے قبل ہی بنایا گیا کارپٹ روڈ کشمیر چوک اور پرانا زرعی بنک کے سامنے بیٹھنا شروع ہوگیا ہے اعلی حکام سے ذمہ دار افسران اور ٹھکیدار کے خلاف فوری سخت کاروائی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -