1900سے قبل واپڈا پیسکو ایک منافع بخش ادارہ تھا: گوہر تاج خان 

  1900سے قبل واپڈا پیسکو ایک منافع بخش ادارہ تھا: گوہر تاج خان 

  

           بنوں (نمائندہ خصوصی)فوج کے بعد واپڈا پیسکو پاکستان کا سب سے بڑا اور طاقتورادارہ ہے واپدا پیسکو کو نقصان پہنچانے اور اسے خسارے میں لیجانے کے ذمہ دار ملازمین اور عہدیدار نہیں بلکہ حکومت اور آئی ایم ایف ہے آئی ایم ایف کے ایماء چوراور عوام دشمن حکمران واپڈاکی نجکاری کیلئے واپڈاپیسکو کو ناکام اوربدنام کررہے ہیں لیکن جب تک مزدور زندہ ہیں سینے پر گولی کھائیں گے،جیل جائیں گے مگر واپڈا کی نجکاری کسی صورت نہیں ہونے دیں گے ان خیالات کا اظہار پاکستان واپڈا ہائیڈروالیکٹرک سنٹرل لیبر یونین کے مرکزی چیئرمین گوہر تاج خان،صوبائی چیئرمین حاجی محمد اقبال خان،یونس شاہ،خیبر سرکل کے چیئرمین شفیع اللہ، بنوں سرکل کے چیئرمین پیر اشفاق خان اور سیکرٹری شمس العابدین نے واپڈا کالونی میں بنوں سرکل کے عہدیداروں کی خلف برداری تقریب،احتجاجی جلسہ اور دو ملازمین کے ریٹائرمنٹ کے سلسلے میں منعقدہ بڑے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا مقررین نے کہا کہ 1990سے قبل واپڈا پیسکو ایک منافع بخش ادارہ تھا اور ملکی نصف کیلئے80فیصد حصہ واپڈا پیسکو فراہم کرتا تھا لیکن جب یورپ کو پتہ چلا کہ واپڈا کی بدولت پاکستان تیزی سے ترقی کررہا ہے اور دنیا پر حکمرانی کرنے جارہا ہے تو ایک ساز کے تحت واپڈا پیسکو کو ٹارگٹ کیا گیا انہوں نے کہا کہ بے نظیر دور سے ہر حکومت نے واپڈا کی نجکاری کی کوشش کی لیکن مالزمین نے اتحاد اور قربانیوں سے اس سازش کو ناکام بنایا یہاں تک کہ بنوں اورفیصل آباد سے بجلی فیڈرز کی نجکاری سے محکمہ کی نیلامی اور نجکاری کا تجربہ کرنے کی کوشش کی گئی لیکن بنوں سرکل کے ملازمین کے تاریخی احتجاج اور ہڑتال نے حکومت کو پسپا کیا انہوں نے کہا کہ واپڈا میں 75فیصد آسامیاں خالی ہیں اس پر بھرتی کرنے،ملازمین کے پروموشن اور نئی بھرتیوں کیلئے ہم مینجمنٹ کے ساتھ رابطے میں ہیں،بنوں سرکل کے چیئرمین پیراشفاق خان نے کہا کہ قائدین آئی جی خیبر پختونخوا کے ساتھ مذاکرات کرکے واپڈا پیسکو پولیس سٹیشن کو بحال کریں کیونکہ ضلعی پولیس ہمارے ساتھ بجلی چوروں کے خلاف ایف آئی آر درج کرانے میں تعاون نہیں کررہی ہے روزانہ ہر سب ڈویژن سے چالیس سے پنتالیس مراسلات بھجوائے جاتے ہیں لیکن پولیس والے ایف آئی درج یہ کہہ کر نہیں درج کراتے ہیں کہ ضلعی آفسران نے واپڈا پیسکو کے مقدمات درج نہ کرانے کی ہدایت کی ہے جبکہ واپڈاا پولیس پولیس سٹیشن کے خاتمے سے واپڈا کالونی غیر محفوظ ہوگئی ہے اور احتجاج کیلئے آنے والے مظاہرین واپڈا دفاتر اور واپڈا گاڑیوں اور سامان کو نقصان پہنچاتے ہیں اور ملازمین کی جانوں کو خطرہ لاحق ہے انہوں نے واپڈا پیسکو بنوں کیلئے نئی گاڑیوں،ضروری سامن،فرنیچر،بھرتیوں،پی او ایل،خستہ حال عمارتوں کی  ازسر نو تعمیر ومرمت،ملازمین کے پروموشن اور دیگر ضروریات کے حوالے سے سپاسنامہ پیش کیا۔قبل ازیں نو منتخب عہدیداروں سے مرکزی چیئرمین گوہر تاج خان نے خلف لیا اور ریٹائرمنٹ پر جانوں والوں کو تحائف پیش کئے گئے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -