انجری کا وقت کیسا گزرا؟ حارث رؤف کے سوال پر شاہین شاہ آفریدی نے ساری کہانی سنا دی

انجری کا وقت کیسا گزرا؟ حارث رؤف کے سوال پر شاہین شاہ آفریدی نے ساری کہانی ...
انجری کا وقت کیسا گزرا؟ حارث رؤف کے سوال پر شاہین شاہ آفریدی نے ساری کہانی سنا دی

  

برسبین (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستانی فاسٹ بولر شاہین شاہ آفریدی کا کہنا ہے کہ انجری کے بعد ری ہیب کا وقت بہت مشکل اور کھٹن تھا لیکن 2 ماہ سے زیادہ کا وقت اکیلے ایک کمرے میں رہنا اور پھر ری ہیب کے عمل سے گزرنا ایک مشکل کام ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ نے سوشل میڈیا   پر  ایک ویڈیو پوسٹ کی ہے جس میں ان کے ساتھ حارث رؤف ہیں ، حارث رؤف نے شاہین شاہ آفریدی  سے سوال کیا کہ  انجری کے بعد ری ہیب  کا وقت کیسا گزرا؟ جس پر شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ جو بھی مشکلیں آتی ہیں اللہ کی طرف سے آتی ہیں انھیں یقین تھا کہ یہ مشکل وقت گزر جائے گا۔

 شاہین کے مطابق  انھیں امید تھی کہ میں کم بیک کروں گا اور ہدف تھا ورلڈ کپ میں شرکت کرنا اور ٹیم کو جوائن کرنا ہے، پاکستان ٹیم کے تمام کھلاڑی انجری کے دوران ان سے رابطے میں رہتے تھے۔

شاہین شاہ آفریدی نے کہا کہ ان کی غیر موجودگی میں ٹیم اچھا کھیل رہی تھی جس سے ان کی حوصلے مزید بڑھ رہے تھے کہ ٹیم پاکستان ایک کھلاڑی پر ہی انحصار نہیں کرتی اورجس طرح ان کی غیر موجودگی میں حارث رؤف نے بولنگ کی وہ قابل تعریف ہے۔

 انہوں نے بتایا کہ ابتدا میں  تو ان سے چلا بھی نہیں جارہا تھا دوڑنا تو دور کی بات تھی ، پہلے تھوڑی تھوڑی  واک شروع کی، تیز تیز چلنا شروع کیا پھر ہلکی رننگ کرنا شروع کی اور پھر آہستہ آہستہ بولنگ کا عمل شروع کیا ۔

دوران گفتگو حارث رؤف نے بھی شاہین شاہ کی ہمت کی تعریف کی اور کہا کہ  وہ اتنی بڑی انجری سے نجات حاصل کرکے دوبارہ ٹیم میں واپس آئے ہیں،  انہیں شاہین شاہ کی انجری دیکھ کر ڈر سا لگ گیا تھا کیوں کہ وہ ہر میچ سے قبل شاہین شاہ سے مشورہ لیتے تھے کہ کس طرح بولنگ کرنی ہے۔

مزید :

کھیل -