تارکین وطن کے معاملے پر مختلف ممالک میں اختلافات پیدا ہو گئے

تارکین وطن کے معاملے پر مختلف ممالک میں اختلافات پیدا ہو گئے

ہنگری(آن لائن)تارکینِ وطن کے معاملے پر مختلف حکومتوں کے درمیان اختلافات کی وجہ سے یورپ میں شمال مشرق کے راستے سے داخل ہونے والوں کو ایک ملک کی سرحد سے دوسرے ملک کی سرحد کی جانب دھکیلا جا رہا ہے۔17 ہزار سے زائد تارکینِ وطن کے داخلے کے بعد کروئیشیا نے پناہ تلاش میں آنے والوں کے لیے دروازے کھولنے کی پالیسی کو تبدیل کر دیا۔ اب وہ ہزاروں افراد کو شمال کی جانب بھیج رہا ہے جس کے باعث سلوینیا اور ہنگری ناراض ہو رہے ہیں۔دوسری جانب ہنگری اپنی سرحد پر خاردار باڑ لگا رہا ہے اور اطلاعات کے مطابق وہ اپنی سرحد پر آنے والے تاررکینِ وطن کو آسٹریلیا بھجوا رہا ہے۔ہزاروں تارکینِ وطن رواں ہفتے سربیا کے راستے کروئیشیا میں داخل ہوئے تھے کیونکہ ہنگری نے سربیا سے متصل اپنی سرحد کو بند کر دیا تھا۔ جس کی وجہ سے شمال کی جانب ان کا راستہ کٹ گیا تھا۔ادھر ہنگری نے اپنا موقف بدلتے ہوئے تاکرینِ وطن کو داخلے کی اجازت دے دی ہے۔خیال رہے کہ اگلے ہفتے یورپی یونین میں تارکینِ وطن کے حوالے سے دو اہم اجلاس منعقد ہوں گے۔ پناہ کی تلاش میں آنے والے ان افراد میں سے زیادہ تر کا تعلق شام، افغانستان اور عراق سے ہے۔

مزید : عالمی منظر