شہباز شریف کے طیارے کو حادثہ؟

شہباز شریف کے طیارے کو حادثہ؟

الیکٹرونک میڈیا پر وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کے طیارے کو پیش آنے والے حادثے کی خبر چلی تو خیال ہوا کہ شاید موسم کی خرابی نے طیارے کو ’’فورس لینڈنگ‘‘ پر مجبور کر دیا ہے، لیکن تفصیل سے معلوم ہوا کہ ایسا نہیں، بلکہ طیارے میں کوئی عجیب ہی نقص پیدا ہوا، جو ناقابلِ فہم ہے۔ اللہ کا شکر ادا کرنا چاہئے کہ بالآخر خیریت رہی اور پائلٹ طیارے کی ایمرجنسی لینڈنگ میں کامیاب ہو گیا، ورنہ خود وزیراعلیٰ نے آیت الکرسی اور کلمہ شہادت کا ورد کر کے اپنی جان اللہ کے سپرد کر دی تھی، لیکن بچانے والا بڑا اور عظیم تر ہے، اِس لئے سب محفوظ رہے۔ بقول حضرت علیؓ موت خود زندگی کی حفاظت کرتی ہے، اِس لئے یہ کہا جا سکتا ہے کہ ابھی وہ وقت نہیں آیا تھا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف اور دوسرے حضرات کے بخیریت اُتر آنے پر انہوں نے تو اللہ کا شکر ادا کیا ہم بھی ان کو مبارکباد دیتے ہیں کہ جسے اللہ رکھے اُسے کون چکھے، زندگی بچی مبارک ہو، وزیراعظم محمد نواز شریف نے بہرحال تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔ یہ تحقیق بھی تکنیکی نوعیت کی ہے کہ یہ طیارہ جیٹ انجن والا اور اچھی حالت میں ہے کہ اچھی کمپنی کا بھی ہے، پھر یقیناًاس کی دیکھ بھال کا بھی کام ہوتا رہتا ہو گا، اب یہ دیکھنا ہو گا کہ نقص پیدا ہوا کہ طیارے نے فضا میں ہچکولے کھائے اور پھر یہ نوبت بھی آئی کہ سٹیرنگ کنٹرول ختم ہوا، پائلٹ لینڈنگ کے لئے لایا اور طیارے نے آسمان کا رُخ کر لیا۔ اب طیارے کی تحقیقات کا آغاز تو کر ہی دیا گیا ہو گا، اس طیارے کی مکمل انسپکشن ہونا چاہئے اور سب سے پہلے اس میں پیدا ہونے والا نقص تلاش کرنا چاہئے، اس کے بعد ہی یہ طے کرنا ہو گا کہ اس میں کس کا قصور ہے؟ دانستہ قصور ہو تو اس کی سزا سخت تر ہونا لازم ہے اور اگر اتفاقی ہے تو پھر سلوک بھی اسی کے مطابق ہونا چاہئے۔ بہرحال تحقیق فنی اور تکنیکی بنیادوں پر ماہرین سے کرانا چاہئے۔ وزیراعلیٰ کو مبارکباد کہ وہ اپنے حوصلوں کے ساتھ موجود ہیں۔

مزید : اداریہ