آئینی ادارے ذمہ داریاں نبھاتے تو احتجاجی مارچ کی ضرورت نہ پڑتی،محمود الر شید

آئینی ادارے ذمہ داریاں نبھاتے تو احتجاجی مارچ کی ضرورت نہ پڑتی،محمود الر شید

  

لاہور( نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں محمود الر شید نے کہا کہ آئینی ادارے اپنا کام مکمل اور ایمانداری سے کرتے تو کسی مارچ، دھرنے اور احتجاج کی ضرورت نہ پڑتی، ہر ادارے کے پاس گئے، انصاف نہ ملا، مجبور ہو کر سڑکوں پر نکلے، رائے ونڈ کوئی مقدس مقام ہے نہ وہاں فرشتے رہتے ہیں جہاں احتجاج ریکار ڈ نہیں کرایا جا سکتا، رائے و نڈ احتجاج پر اعتراض کرنے والے لندن میں جمائما کی رہائش گاہ کے باہر احتجاج کرتے وقت کیوں نہ شرمائے، جاتی عمرا ء کو وزیراعظم ہاؤس کا درجہ حاصل ہے قوم کے ٹیکس کا پیسہ خرچ کیا جاتا ہے، احتجاج کوئی غیر آئینی اقدام نہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز پنجاب پبلک سیکرٹریٹ میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ میاں محمود الر شید نے کہا کہ احتجاج پر امن ہوگا، کوئی رکاوٹ برداشت نہیں کی جائیگی، حکومت شرارت اور کارکنوں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ بند کرے ورنہ حالات کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہو گی، ایک سوال کے جواب میں میاں محمود الر شید نے کہا کہ کہ حکومت اوچھے ہتھکنڈوں سے باز رہے،کسی ایک کارکن کو خراش بھی آئی تو اڈا پلاٹ سے رخ تبدیل بھی کر سکتے ہیں اور کسی کارکن کو نقصان پہنچا تو مقدمہ شہباز شریف پر درج کرائیں گے۔

محمود الر شید

مزید :

صفحہ آخر -