فنکارہ نوشابہ بیٹے کے علاج کیلئے در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

فنکارہ نوشابہ بیٹے کے علاج کیلئے در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

  

پشاور(کرائمز رپورٹر )پشاور سے تعلق ر کھنے والی پی ٹی وی اور ریڈیوپاکستان کی صدارتی ایوارڈ یافتہ فنکار ہ تحریک انصاف کی صوبائی حکومت اور متعلقہ اداروں کی بے حسی کے باعث اپنے جوانسالہ بیٹے شکیل احمد کے علاج کیلئے بھیک مانگنے پر مجبور ہیں ۔انہوں نے وفاقی حکومت اور مخیر حضرات سے اپنے اکلوتے بیٹے کے علاج کیلئے مالی امداد کی اپیل کی ہے گزشتہ روز پشاور پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ ان کا 29سالہ بیٹا شکیل جو انکے شوہر کے انتقال کے بعد واحد سہارا ہے وہ گزشتہ ڈیڑھ سال سے کڈنی کے مرض میں مبتلاہے انکے دونوں گردے شدید متاثر ہوچکے ہیں جسکے علاج پر اپنی ساری جمع پونجی خرچ کردی ہے اورگھر بھی فروخت کرکے سارا رقم انکے علاج پر خرچ کرچکی ہوں ۔اب ڈاکٹروں نے بیٹے کے دونوں گردے نکالنے اور نئے گردے لگانے کا مشورہ دیاہے جس سے بیٹے کی زندگی بچ سکتی ہے ۔لیکن میرے پاس اتنے وسائل موجود نہیں ہے کہ میں نئے گردوں کا انتظام کرسکوں ۔نوشابہ نے صوبائی حکومت ،پی ٹی وی اور ریڈیو پاکستان کے حکام سے گلہ کرتے ہوئے کہاکہ میں نے 1979سے اب تک بطور فنکارہ اس صوبے کی خدمت کی اور کبھی بھی کسی سے ایک روپیہ کی مدد نہیں مانگی ہے لیکن اب میں ایک بے بس ماں ہوں۔اپنے جواں سالہ بیٹے کے علاج کیلئے ہر کسی سے بھیک مانگنے پر مجبور ہوگئی ہوں۔لیکن افسوس کہ ہر طرف سے مجھے مایوس کیا گیاہے انہوں نے کہاکہ اب میں خیبر پختونخواحکومت سے دلبرداشتہ ہوکر وفاقی حکومت اور دمخیر حضرات سے مددکی اپیل کرنے پرمجبور ہوگئی ہو

مزید :

پشاورصفحہ آخر -