امریکہ میں پاکستانی سیکرٹری خارجہ کی میڈیا بریفینگ سے قبل ایک ایسا واقعہ جس نے بھارت میں آگ لگا دی

امریکہ میں پاکستانی سیکرٹری خارجہ کی میڈیا بریفینگ سے قبل ایک ایسا واقعہ جس ...
امریکہ میں پاکستانی سیکرٹری خارجہ کی میڈیا بریفینگ سے قبل ایک ایسا واقعہ جس نے بھارت میں آگ لگا دی

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستانی سیکرٹری خارجہ اعزاز چوہدری کی نیو یارک میں میڈیا بریفنگ سے قبل بھارتی نجی ٹی وی چینل کے رپورٹر کو یہ کہہ کر ہال سے باہر نکال دیا گیا کہ ’’اس انڈین کو باہر نکالو ‘‘ ،پاکستانی سیکرٹری خارجہ کی پریس کانفرنس میں کسی ایک بھی ہندستانی صحافی کو شامل نہیں ہونے دیا گیا ۔

بھارتی نجی چینل ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ نے دعویٰ کیا ہے کہ اڑی سیکٹر میں انڈین فوج کے ہیڈ کوارٹر پر ہونے والے حملے کے بعد بھارت اور پاکستان کے درمیان کشیدگی اپنے عروج پر ہے ،اس کا ایک مظاہرہ امریکہ میں اس وقت دیکھنے کو ملا جب نیویارک کے ’’روز ویلٹ ہوٹل ‘‘ میں پاکستانی سیکرٹری خارجہ اعزاز چوہدری میڈیا کو بریفینگ دینی تھی ۔ان کی آمد سے قبل وہاں ’’این ڈی ٹی وی ‘‘ کے رپورٹر نمرتابرار بھی موجود تھے ،بھارتی ٹی وی کا کہنا ہے اس رپورٹر کو دیکھتے ساتھ ہی کہا گیا ’’اس انڈین کو یہاں سے نکالو ‘‘جس کے بعد بھارتی صحافی کو ہال سے باہر نکال دیا گیا ،بھارتی ٹی وی نے دعوی کیا ہے کہ پاکستانی سیکرٹری خارجہ کی میڈیا بریفینگ میں کسی ایک بھی بھارتی صحافی کو شامل نہیں ہونے دیا گیا ۔ہندوستانی ٹی وی کا کہنا تھا کہ اس ایک واقعہ سے محسوس ہو رہا ہے کہ دونوں ممالک میں تناؤ کس حد تک بڑھ چکا ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کس حد تک خراب ہو چکے ہیں ۔بھارتی ٹی وی نے کہا کہ اس سے قبل جب پاکستانی وزیر اعظم میاں نواز شریف سے اڑی سیکٹر پر ہونے والے حملے کے حوالے سے سوال کیا گیا تو انہوں نے اس سوال کا جواب دینے سے انکار کر دیا تھا ۔

دوسری طرف بریفنگ کی کوریج کرنے والے صحافیوں کا کہنا ہے کہ این ڈی ٹی وی کے صحافی نے وہاں اپنا مائیک رکھا جس پر پاکستانی مشن کے افراد نے ان سے کہا کہ وہ یہ ایونٹ کور نہیں کرسکتے اور یہ ایونٹ ختم ہونے کے بعد سیکریٹری خارجہ ان سے ملاقات کرکے سوالوں کے جواب دیں گے۔اس بات پر بھارتی میڈیا سخت سیخ پا ہوا اور واویلا کرنے لگا۔نیویارک میں پاکستانی مشن کا کہنا ہے کہ بھارتی حکومت بھی پاکستانی میڈیا کو اپنے ایونٹس کی کوریج نہیں کرنے دیتے اور ہم نے کچھ غلط نہیں کیا اور بھارت کو اس ہی کی زبان میں جواب دیا گیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -