اسرائیل مستقل طور پر فلسطینی سر زمین پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا،تشدد کوروکنے کابہترین راستہ ڈپلومیسی ہے:باراک اوبامہ کا اقوام متحدہ سے بطور امریکی صدر آخری خطاب

اسرائیل مستقل طور پر فلسطینی سر زمین پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا،تشدد ...
اسرائیل مستقل طور پر فلسطینی سر زمین پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا،تشدد کوروکنے کابہترین راستہ ڈپلومیسی ہے:باراک اوبامہ کا اقوام متحدہ سے بطور امریکی صدر آخری خطاب

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی صدر باراک اوبامہ نے کہا ہے کہ چین اور بھارت میں قابل ذکر معاشی ترقی ہوئی ہے،دنیاکی معیشت اربوں لوگوں کی مدد کر رہی ہے،اسرائیل مستقل طور پر فلسطینی سر زمین پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا،ہمیں شام میں مشکل ترین سفارت کاری کا کام کرنا ہوگا،تشدد کوروکنے کابہترین راستہ ڈپلومیسی ہے۔

امریکی صدراوباما کا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیامیں جمہوری اقوام میں پچھلے25سال میں اضافہ ہواہے،انسانیت کو زندہ رکھنے کے لیے ہمیں ہرلحاظ سے بہتر اقدامات کرنے ہوں گے،یہ ہم پر ہے کہ ہم ان مشکلات کا حل کیسے نکالتے ہیں،پوری دنیامیں مشکلات بڑھتی جارہی ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ عالمی برادری کو مختلف چیلنجز کا سامنا ہے، دنیا کو محفوظ بنانے کیلئے اقدامات اٹھانے ہونگے،داعش پوری دنیا کیلئے بڑا خطرہ ہے،یہ ہم پر منحصر ہے کہ مشکلات سے کیسے نکلنا ہے،دہشتگرد سوشل میڈیا کو معصوم مہاجرین کے خلاف استعمال کررہے ہیں،دنیا کی ترقی کو کسی صورت رکنانہیں چاہیے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ترقی کے باوجود لوگوں کا اعتماد اداروں سے اٹھتا جارہا ہے،ہمیں دنیا میں جمہوریت اور معیشت کے نئے ماڈلز کی ضرورت ہے،اقلیتوں اور خواتین کے لیے مواقعے پیدا کیے جائیں ، جمہوری اقدار میں ترقی کے لیے ہمیں عالمی اتحاد کی ضرورت ہے،دنیا کی معیشت کو مساوی سطح پر لانے کیلیے مزید اقدامات کرناہوں گے،دنیا میں بدترین غربت کا شکار40 فیصد افراد کم ہوکر10 فیصد رہ گئے ۔

باراک اوبامہ نے بطور امریکی صدر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں آخری خطاب میں کہا ہے کہ وہ ممالک کامیاب ہیں جہاں کے عوام اپنے ملک کا سٹیک سمجھتے ہیں،ایسی دنیا جہاں ایک فیصد لوگ بیشتر دولت پر قابض ہوں وہاں ننانوے فیصد لوگ مستحکم نہیں ہوسکتے ہیں۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہمیں بین الاقوامی تعاون کے فروغ میں اپنی سنجیدگی برقرار رکھنا ہوگا،اسرائیل مستقل طور پر فلسطینی سر زمین پر قبضہ برقرار نہیں رکھ سکتا،ہمیں شام میں مشکل ترین سفارت کاری کا کام کرنا ہوگا،بہتر مقاصد حاصل کرنے کے لیے مزدوروں کی حالت سنوارنی ہوگی،سماجی تبدیلیوں سے پیدا ہونے والی عالمی تشویش کا کوئی آسان حل نہیں، ہمیں ہر قسم کی بنیاد پرستی اور نسل پرستی کو مسترد کرنا ہوگا،احترام پانے کیلیے مذہبی تعلیمات دینےوالوں کوسائنس،ریاضی کی تعلیم بھی دینا ہوگی۔

بھارتی فوج کی بربریت جاری ،فوجی ہیڈ کوارٹر پر حملے کے دو روز بعد 10کشمیری نوجوانوں کو ’’پاکستانی جنگجو ‘‘ قرار دے کر شہید کر دیا

انہوں نے کہا ہے کہ عالمی صحت میں سرمایہ کاری اورغریب ترین ممالک کی مدد کرناہوگی،تشدد ترک کرنا فلسطینیوں کے فائدے میں ہوگا،عالمی برادری کوتعمیری کام کرنے والوں کا ساتھ دینا چاہیے،تشدد کوروکنے کابہترین راستہ ڈپلومیسی ہے،دنیا سمجھتی ہے کہ ان مسائل کا حل بھی امریکا کے پاس ہے،دنیا سمجھتی ہے کہ زیادہ تر مسائل یا تو امریکا کی وجہ سے ہیں،ہمیں بین الاقوامی تعاون کے فروغ میں اپنی سنجیدگی برقرار رکھنا ہوگا۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -