پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر کا ہیپاٹائیٹس سے بچاؤ اور روک تھام کے حوالے سے خصوصی لیکچر

پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر کا ہیپاٹائیٹس سے بچاؤ اور روک تھام کے حوالے سے خصوصی ...

لاہور(پ ر)پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر کے صدر اور چیف ایگزیکٹو آفیسر ، پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر نے اے ۔آر۔سی میس آڈیٹوریم، پاکستان نیول ہیڈ کواٹرز اسلام آباد میں وائرل ہیپاٹائیٹس سے بچاؤ اور روک تھام کے حوالے سے ایک خصوصی لیکچر دیا۔اس لیکچر کا اہتمام پاکستان نیول ہیڈ کواٹرز اسلام آباد نے کیاجس کا مقصد ہیپا ٹائیٹس سے بچاؤ اور تدارک کے بارے میں آگہی تھا۔ڈائریکٹر جنرل میڈیکل سروسز پاکستان نیوی ،سرجن رئیر ایڈمرل نجم الثاقب خان نے اس لیکچر میں خصوصی طور پر شرکت کی جبکہ پی۔این۔ایس حفیظ اسلام آباد کے شعبہ میڈیسن کے سربراہ سرجن کیپٹن ندیم فضل اور کمانڈنگ آفیسر سرجن کیپٹن نجم الثاقب خان نیازی سمیت دیگر افسران اور ان کی فیملیز اور سٹاف کی بڑی تعداد بھی حاضرین میں شامل تھی۔پروفیسر ڈاکٹر سعید اختر نے اس موقع پرپاکستان میں وائرل ہیپاٹائٹس کے بارے میں اعداد و شمار پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں ہر 10میں سے ایک فرد کو ہیپا ٹائٹس بی یا سی کی بیماری لاحق ہے اور یہ شرح دنیا بھر میں مصر کے بعد دوسرے نمبر پر ہے۔

انھوں نے مذید بتایا کہ ہیپا ٹائٹس بی اور سی کے پھیلنے کی بڑی وجوہات میں غیر ضروری اور استعمال شدہ سرنج کا استعمال ، دندان ساز کے آلودہ آلات، غیر تصدیق شدہ انتقال خون اور حجام کے آلودہ آلات وغیرہ شامل ہیں جبکہ عوام میں اس مرض کے بارے میں آگہی اور تعلیم کی کمی وہ عوامل ہیں۔

جن سے حالات مذید خراب ہورہے ہیں ۔انھوں نے ہیپا ٹائٹس بی سے بچاؤ کیلئے ویکسین کے مجوزہ تین بار استعمال کو یقینی بنانے پر زور دیا اور کہا کہ ہمارا یہ چھوٹا سا عمل اس مرض سے بچاؤ اور تدارک کیلئے انتہائی اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ڈاکٹر سعید نے ہیپاٹائٹس سی کے مرض کی بروقت تشخیص اور علاج کی اہمیت بھی بیان کی اورکہاکہ اگر ہیپاٹائٹس سی کی بروقت تشخیص نہ کی جائے تو یہ مرض بڑھ کر جگر کے کینسر جیسے موذی مرض کی صورت اختیار کرسکتا ہے ، لہٰذاضروری ہے کہ ہر شخص ہیپاٹائٹس سی کیلئے سکریننگ کروائے تاکہ بروقت تشخیص اور علاج سے اس کے پھیلاؤ میں کمی آسکے ۔ انھوں نے پاکستان میں وائرل ہیپاٹائٹس کی روک تھام اور اس سے بچاؤ کیلئے جاری کاوشوں کا ذکر کرتے ہوئے حاضرین کو بتایا کہ پی۔ کے۔ ایل۔ آئی اینڈ آر۔ سی(PKLI&RC)حکومت پنجاب اور وزیر اعلیٰ شہباز شریف کے خصوصی تعاون سے، اپنے مشن کے مطابق پنجاب بھر میں ہیپاٹائٹس پریوینشن اینڈ ٹریٹمنٹ پروگرام کے تحت کلینکس قائم کررہاہے ، اس سلسلے میں صوبے بھر کے25 اضلاع میں ہیپاٹائٹس پریوینشن اینڈ ٹریٹمنٹ کلینکس قائم کیے جائیں گے۔ یاد رہے کہ لاہور سمیت قصور، جہلم اور راجن پور میں پہلے ہی یہ کلینکس قائم کیے جاچکے ہیں جبکہ لاہور میں بین الاقوامی معیار کے عین مطابق ایک وسیع و عریض ہسپتال کی تعمیر کا کام جاری ہے جو رواں سال کے آخر تک مکمل ہو جائے گا۔اس لیکچر کا اختتام سوال وجواب کے سیشن پر ہوا۔ آخر میں ڈائریکٹر جنرل میڈیکل سروسز پاکستان نیوی ،سرجن رئیر ایڈمرل نجم الثاقب خان نے ڈاکٹر سعید کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کرتے ہوئے انھیں ایک یادگاری شیلڈ پیش کی اور پاکستان میں وائرل ہیپا ٹائٹس سے بچاؤ اور اس کے تدارک بارے ان کے اس مشن میں بھرپور تعاون کے عزم کا اعادہ کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4