پاکستان میں پلاسٹک کھانے والی فنگس دریافت

پاکستان میں پلاسٹک کھانے والی فنگس دریافت
پاکستان میں پلاسٹک کھانے والی فنگس دریافت

  

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک) کاغذ یا لکڑی کی طرح پلاسٹک گھل کر ختم نہیں ہوتا اور طویل عرصے تک موجود رہ کر ماحول کو آلودہ کرتا ہے لیکن پاکستان کے کوڑے میں ایک فنگس کا انکشاف ہوا ہے جو پلاسٹک کو چند ہفتوں میں گھلا کر ختم کر سکتی ہے۔پوری دنیا کی فضا، پانی، سمندر اور زمین پر پلاسٹک کی موجودگی ایک زبردست چیلنج بنی ہوئی ہے اور پلاسٹک کو تلف کرنے کی کئی کوششیں ناکام ہو چکی ہیں۔ اسی لیے اب چینی ماہرین نے پاکستان کوڑے سے ملنے والی ایک فنگس کو تبدیل کر کے اسے پلاسٹک تلف کرنے کے قابل بنایا ہے۔ورلڈ اکنامک فورم کی ایک رپورٹ کے مطابق ایسپرجیلس ٹیوبنجینسس فنگس چند ہفتوں میں پلاسٹک کا کچرا ختم کر دیتی ہے اور یہ فنگس اسلام آباد کے ایک کوڑے دان سے ملی ہے تاہم چینی ماہرین نے اس پر مزید تحقیق کر کے بتایا ہے کہ اطراف کا درجہ حرارت، پی ایچ کا توازن، اور اگنے والے مقام اس فنگس کی صلاحیت پر اثرانداز ہوتے ہیں۔

اور ماہرین فنگس کی بہترین کارکردگی کے لیے موزوں حالات جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔چینی ماہرین کے مطابق ایسپرجیلس ٹیوبنجینسس تجربہ گاہ میں مؤثر ثابت ہوئی ہے اور اس کی تحقیقات سائنسی جریدے اینوائرمینٹل پلوشن میں شائع ہوئی ہیں۔ ماہرین نے نوٹ کیا کہ فنگس کا مرکزی حصہ مائسیلیئم پولی ایسٹر پولی یوریتھین پلاسٹک پر اپنی کالونی بناتا ہے اور پلاسٹک کی سطح پر خراشیں ڈال کر اسے ٹوٹ پھوٹ کا شکار بناتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4