لو میرج کیس، بیوی کو خاوند کیساتھ جانے کی اجازت پر ہائیکورٹ میدان جنگ بن گیا

لو میرج کیس، بیوی کو خاوند کیساتھ جانے کی اجازت پر ہائیکورٹ میدان جنگ بن گیا

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ میں لومیرج کیس نمٹاتے ہوئے بیوی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی،عدالت سے نکلتے ہی لڑکی اور لڑکے کے اہل خانہ ایک دوسرے پر ٹوٹ پڑے،دونوں طرف سے لاتوں اور گھونسوں کا آزادانہ استعمال کیا گیا۔ لڑائی سے منع کرنے پر ان لوگوں نے عدالت عالیہ کے سیکیورٹی اہلکاروں سے بھی ہاتھا پائی کی جس کے بعد انہیں گرفتار کرکے تھانہ پرانی انارکلی کے حوالے کردیا گیا۔عدالت کے روبرو چونیاں کی رہائشی حلیمہ بی بی نے موقف اختیار کیا کہ اس نے سعد نامی شخص سے پسند کی شادی کی ہے اسے کسی نے اغواء نہیں کیا ،اس کے خاوند کے خلاف اغواء کا جھوٹا مقدمہ خارج کرنے کا حکم دیا جائے، عدالت نے لڑکی کے بیان کی روشنی میں لومیرج کیس نمٹاتے ہوئے بیوی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی، کمرہ عدالت سے باہر نکلتے ہی لڑکی اور لڑکے کے اہل خانہ ایک دوسرے پر ٹوٹ پڑے،فریقین نے ایک دوسرے پر لاتوں اور گھونسوں کا آزادانہ استعمال کیا،مشتعل افراد نے منع کرنے پر ہائی کورٹ کے سیکیورٹی اہلکاروں سے بھی ہاتھا پائی کی تاہم سیکیورٹی اہلکاروں نے ہنگامہ آرائی کرنے والوں کو حراست میں لے لیا،جنہیں بعد میں تھانہ پرانی انارکلی کے حوالے کردیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر