سکھر کی سیمنٹ فیکٹری میں دھماکہ ،3سکیورٹی اہلکاروں سمیت 5جاں بحق، 9زخمی

سکھر کی سیمنٹ فیکٹری میں دھماکہ ،3سکیورٹی اہلکاروں سمیت 5جاں بحق، 9زخمی

سکھر(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) صوبہ سندھ میں سکھر کے مقام پر قائم روہڑی سیمنٹ فیکٹری میں بارودی مواد پھٹنے سے 3 سکیورٹی اہلکاروں سمیت 5 افراد جاں بحق اور 9 زخمی ہوگئے۔پولیس کے مطابق واقعہ سکھر میں قائم روہڑی سیمنٹ فیکٹری میں پیش آیا جہاں پولیس کے اسپیشل برانچ کے بم ڈسپوزل اسکواڈ کے اہلکار باردوی مواد کو ناکارہ بنانے کی کوششوں میں مصروف تھے۔پولیس نے بتایا کہ سرچ آپر یشن کے دوران سیمنٹ فیکٹری میں 2000 کلو گرام بارودی مواد موجود تھا، جسے تلف کیا جارہا تھا کہ وہ پھٹ گیااور دھماکے کے نتیجے میں 5 افراد جاں بحق ہو گئے ، جاں بحق ہونیوالوں میں پولیس کے 2بی ڈی ایس اہلکار،ایک رینجرز کا جوان اور فیکٹری کا ایک ملازم ، جبکہ 9 افراد زخمی بھی ہوئے جن میں چھ رینجرز جوان، فیکٹری کاجی ایم اور دومزدور شامل ہیں ،دھماکے کے باعث علاقے میں خوف وہراس پھیل گیا، مو قع پر موجود پولیس اور ریسکیو اہلکاروں نے زخمیوں اور لاشوں کو ہسپتال منتقل کیا۔ایس ایس پی سکھر امجد شیخ کا کہنا تھا مختلف علاقوں سے گرفتار دہشت گردوں سے ملنے والے بارودی مواد کو سیمنٹ فیکٹری میں تلف کیا جارہا تھا کہ وہ دھماکے سے پھٹ گیا۔ دھماکا خیز مواد کیسا تھ 3 ہزار ڈیٹونیٹر بھی موجود تھے۔ایس ایس پی سکھر کے مطابق مکمل حفاظتی اقدامات کیساتھ بارودی مواد ناکارہ بنایا جارہا تھاکہ حادثہ پیش آگیا ، جائے وقوعہ پر پولیس رینجرز کی بھاری نفری تعینات کردی گئی ہے ۔ وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے روہڑی فیکٹری دھماکے میں سکیورٹی اہلکاروں سمیت متعدد افراد کی شہادت کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی۔وزیراعلیٰ ہاؤس سے جاری بیان میں آئی جی کو واقعے کی تفصیلات فراہم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ’یہ بارود مواد کہا سے آیا تھا اسے فیکٹری میں کیوں لایا گیا اور اگر یہ بارودی مواد کریشنگ کیلئے استعمال کیا جانا تھا تو اسے ناکارہ بنانے کی ضرورت کیوں پیش آئی۔

سکھر دھماکہ

مزید : صفحہ اول