وزیراعلیٰ نے ادویہ کی بوگس خریداری بارے دوبارہ تحقیقات کا حکم دیدیا

وزیراعلیٰ نے ادویہ کی بوگس خریداری بارے دوبارہ تحقیقات کا حکم دیدیا

ملتان(وقائع نگار) وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے ادویہ کی بوگس خریداری بھرتیوں میں بے قاعدگی،فراڈ اور دیگر سنگین الزامات پر چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیلتھ ملتان ڈاکٹر عاشق حسین ملک کیخلاف پیڈ ایکٹ2006 کے تحت انکوائری میں کلین چٹ دینے پر دوبارہ انکوائری کا حکم دے دیا ہے اور سیکرٹری ہائر (بقیہ نمبر38صفحہ12پر )

ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب نبیل اے اعوان کو انکوائری آفیسر مقرر کرتے ہوئے 60یوم میں پیڈایکٹ کے تحت انکوائری مکمل کرکے رپورٹ پیش کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔واضح رہے اس سے قبل اپنی الزامات پر ڈاکٹر عاشق حسینی ملک کی بطور ای ڈی او ہیلتھ مظفر گڑھ کی تعیناتی کے دوران بے قاعدگیوں،فراڈ وغیرہ پر سرگنگا رام ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر نعمان مطلوب کو پیڈایکٹ 2006کے تحت انکوائری کا حکم دیا۔مگر انہوں نے تمام تر الزامات ثابت ہونے کے باوجود ڈاکٹر عاشق حسین ملک کو کلین چٹ دے دی۔انکوائری کے آرڈر میں کہا گیا ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب نے ان الزامات کو نہایت سنجیدگی سے لیا ہے ۔مگر انکوائری آفسر الزامات ثابت ہونے کے باوجود انہیں ثابت کرنے میں ناکام رہا۔بلکہ سابق ای ڈی او ہیلتھ ڈاکٹر عاشق حسین ملک کو کلیئر کردیا۔جس پر پیڈ ایکٹ2006کے تحت ازسرنو تحقیقات کا حکم دیا گیا ہے ۔سی ای او ہیلتھ مظفر گڑھ محکمانہ نمائندہ ہوں گے۔ڈاکٹر عاشقحسین ملک کو چارج شیٹ جاری کرتے ہوئے محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ای ڈی او ہیلتھ مظفر گڑھ تعیناتی کے دوران انہوں نے ادویات کی بوگس خریداری کی۔جعلی تعمیراتی کام کرائے۔2013,2012,2011میں مظفر گرھ میں پیرامیڈیکل سٹاف کی بھرتیوں بے قاعدگی کی ۔2013کے عام انتخابات میں واضھ حکومتی ہدایت کے باوجود ڈاکٹر عاشق حسین ملک نے ڈی سی او مظفرگڑھ کے حکم کے بعد بھی ٹرانسپورٹ فراہم کرنے سے انکار کردیا۔انہیں28دسمبر2011کو ای ڈی او ہیلتھ مظفرگڑھ کے عہدے سے تبدیل کیا گیا اور انہوں نے 29دسمبر2011کو اپنے عہدے کا چارج چھوڑ دیا۔مگر بعدازاں لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ میں تبادلے کیخلاف رٹ دائر کی۔جس پر عدالت نے محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے ان کے تبادلے کے احکامات اس شرط پر معطل کردیے کہ ابھی ڈاکٹر عاشق حسین ملک نے 29دسمبر2011کو چارج چھوڑنے کے احکامات واپس لے لیے۔چارج شیٹ میں بھی یہ کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر عاشق حسین ملک کیخلاف تھا ۔سٹی مظفرگڑھ میں22دسمبر2012کو مقدمہ زیر دفعہ 213پی پی سی درج ہوا۔وہ محکمہ صحت سے غیر قانونی طور پر ٹی اے ڈی اے بھی وصول کرتے رہے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر