’رات کو میں ٹیکسی میں بیٹھی تو اس مسلمان ڈرائیور نے میرا ریپ کرنے کی کوشش کی‘ برطانوی 22 سالہ نوجوان لڑکی کا 5 بچوں کے باپ مسلمان ڈرائیور پر شرمناک الزام، لیکن دراصل ڈرائیور نے ایسا کیا کہا تھا جس وجہ سے جھوٹا الزام لگایا؟ جان کر ہر مسلمان کے پیروں تلے زمین نکل جائے کیونکہ۔۔۔

’رات کو میں ٹیکسی میں بیٹھی تو اس مسلمان ڈرائیور نے میرا ریپ کرنے کی کوشش ...
’رات کو میں ٹیکسی میں بیٹھی تو اس مسلمان ڈرائیور نے میرا ریپ کرنے کی کوشش کی‘ برطانوی 22 سالہ نوجوان لڑکی کا 5 بچوں کے باپ مسلمان ڈرائیور پر شرمناک الزام، لیکن دراصل ڈرائیور نے ایسا کیا کہا تھا جس وجہ سے جھوٹا الزام لگایا؟ جان کر ہر مسلمان کے پیروں تلے زمین نکل جائے کیونکہ۔۔۔

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک لڑکی نے مسلمان ٹیکسی ڈرائیور کوکرائے کی مد میں سور کے گوشت سے بنے کباب سے لتھڑا 10پاﺅنڈ کا نوٹ دیا جو اس لینے سے انکار کر دیا۔ اس بات پر مشتعل ہو کر لڑکی نے ڈرائیور پر ایسا گھٹیا الزام عائد کر دیا کہ علاقے کے مسلمانوں نے اس ڈرائیور سے قطع تعلق کر لیا۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق جب پانچ بچوں کے باپ، مسلمان ڈرائیور نے نوٹ لینے سے انکار کیا تو 22سالہ صوفی پوائنٹن نامی لڑکی نے پولیس کو کال کر دی۔ یہ علی الصبح کا وقت تھا۔ جب پولیس آئی تو لڑکی نے کہا کہ ”اس ڈرائیور نے مجھ پر جنسی حملہ کیا ہے۔“ اس پر پولیس نے ڈرائیور کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کر دیا۔

’میری برہنہ تصاویر میرے بوائے فرینڈ نے انٹرنیٹ پر لیک کردیں لیکن اسکے بعد مجھے سب سے بڑا جھٹکا یہ لگا کہ۔۔۔‘ نوجوان پاکستانی لڑکی نے ایسی بات کہہ دی جو کسی پاکستانی نے کبھی سوچی بھی نہ ہوگی

یہ واقعہ رواں سال اپریل میں پیش آیا تھا۔ اب عدالت کی طرف سے ڈرائیور کو بری کر دیا گیا ہے اور جھوٹا الزام لگانے کے جرم میں لڑکی کو 16ماہ قید کی سزا سنا دی ہے۔ ڈرائیور کا عدالت میں کہنا تھا کہ ”لڑکی کے الزام لگانے کے بعد علاقے کے مسلمانوں، میرے خاندان اور دوستوں نے مجھ سے قطع تعلق کر لیا، انہوں نے مجھ سے بات چیت ترک کر دی اور مجھے اپنے گھر آنے سے بھی روک دیا۔ لڑکی کے جھوٹے الزام کی وجہ سے میری زندگی تباہ ہو کر رہ گئی ہے اور اب میں اپنی ٹیکسی میں اکیلی لڑکیوں کو بٹھاتے ہوئے بھی ڈرتا ہوں۔“

ضرور پڑھیں: سوچ کے رنگ

مزید : برطانیہ