گجرات:موبائل سموں کی غیر قانونی رجسٹریشن کرنیوالا بڑا نیٹ ورک پکڑا گیا

گجرات:موبائل سموں کی غیر قانونی رجسٹریشن کرنیوالا بڑا نیٹ ورک پکڑا گیا

  

 گجرات(بیورورپورٹ) قتل، اغواء برائے تاوان، دہشت گردی جیسی سنگین اور نوسربازی جیسی وارداتوں میں استعمال ہونے والی موبائل سموں کی تیاری اور جعلی رجسٹریشن کرنے والا بڑا نیٹ ورک پکڑا گیا۔ تفصیلات کے مطابق پولیس ٹیم نے کئی روز تک خفیہ طریقے سے ملزمان کی ریکی کی جس پر یہ بات سامنے آئی کہ پانچ کس ملزمان جوکہ مختلف طریقوں سے موبائل سموں کی جعلی رجسٹریشن کرتے ہیں اور یہ سمیں جرائم پیشہ اور نوسر باز افراد کو فروخت کرتے ہیں جو بعد ازاں سنگین جرائم جیسے قتل،ڈکیتی،دہشت گردی اور نوسر بازی سے بذریعہ کالز رقم بٹورنے کے لئے استعمال ہوتی ہیں۔جس پر ملزموں کی گرفتاری کیلئے ایس ایچ او تھانہ ڈنگہ نے پولیس ٹیم کے ہمراہ منگووال چوک میں چھاپہ مارا تو ملزموں نے فرار ہونے کی کوشش کی جس پرپولیس نے ملزمان کا تعاقب کرکے دو ملزمان کو گرفتار کرلیا جبکہ تین ملزمان فرار ہوگئے۔ گرفتار ملزمان میں محمدارشاد ولد تاج محمد قوم جٹ سکنہ چک لال ڈھڈی اور بشارت علی عرف ببو ولد ظفر اقبال قوم جٹ واہگہ سکنہ چک ورسیاں ضلع پاکپتن شامل ہیں، جن کے قبضہ سے سینکڑوں سمیں،سیلیکان کی پٹیاں،پولی تھین گلوز،ٹریسنگ پیپر،ایک  پارسل TCS،ایک پلاسٹک ڈبی معمولہ پاؤڈر برنگ سرخ،تین کیمیکل والی بوتلیں،انتخابی فہرستیں  و دیگر غیرقانونی سامان برآمد کر لیا گیا ہے۔ملزمان مختلف علاقوں میں کرائے کے مکان حاصل کررکھے ہیں۔

 ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کر کے مزید تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔ ڈی پی او گجرات عمر سلامت کا کہنا تھا کہ ایسے گروہوں کا ٹارگٹ بنیادی طور پردیہاتوں کی بزرگ خواتین اور سادہ لوح لوگ ہوتے ہیں جن کو یہ فری سمز،فری گھی یا دیگر انعامات کا لالچ دیکر کر ان سے انکی شناخت یعنی فنگر پرنٹس حاصل کر لیتے ہیں جو بعد ازاں دھوکہ دہی سے انکے نام پر رجسٹر کی گئی سمز سنگین قسم کے جرائم میں استعمال کرتے ہیں۔ ڈی پی او نے خطرناک ملزموں کی گرفتاری پر ایس ایچ او تھانہ ڈنگہ فراست اللہ اور ان کی ٹیم کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور نقد انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔

مزید :

علاقائی -