چارسدہ، شہریوں اور طلباء کا گستاخ انبیاء کے مرتکب ملزم کوحوالے کرنے کا مطالبہ 

چارسدہ، شہریوں اور طلباء کا گستاخ انبیاء کے مرتکب ملزم کوحوالے کرنے کا ...

  

 چارسدہ (بیورورپورٹ) پولیس کے زیر حراست گستاخ انبیاء کے مرتکب ملزم معروف گل کو عوام کے حوالے کرنے کے لیے مشتعل طلباء اور شہریوں کاشہر بھر میں احتجاجی مظاہرے۔مشتعل مظاہرین نے تمام تجارتی مراکز اور دکانوں کو زبردستی بند کرایا۔ پولیس کی بھاری نفری اور بکتر بند گاڑیاں پڑانگ اور چارسد ہ شہر میں تعینات کر دی گئی۔واقعات کے روک تھام کے لیے مذہبی جماعتوں کی ضلعی رہنماؤں پر مشتمل کمیٹی قائم کر دی گئی۔ مبینہ ملزم کے خلاف رات گئے تھانہ پڑانگ میں دفعات   7ATA، 295A،295C،اور 298A کے تحت مقدمات درج کیے گئے۔تفصیلات کے مطابق پڑانگ پولیس کے زیر حراست گستاخ انبیاء کے مرتکب مبینہ ملزم معروف گل سکنہ شہیدہ بازارکے حوالے سے دوسرے روز شہر بھر میں مشتعل طلباء اورہزاروں شہریوں کے احتجاجی مظاہرے منعقد ہوئے۔اس موقع پر ڈنڈ ابردار مظاہرین نے دکانیں بند کردی اور مردان،نوشہرہ،پشاور اور تنگی روڈ پر مارچ کیے گئے۔مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ گستاخ انبیاء کے مرتکب ملزم کو عوام کے حوالے کیا جائے تاکہ عوام اس سے خود نمٹ سکے۔مظاہروں کے دوران پولیس کی بھاری نفری اور بگتربند گاڑیاں پڑانگ اور چارسدہ شہر میں تعینات کر دی گئی۔احتجاجی مظاہرین سے جمعیت علماء اسلام کے ضلعی امیر شیخ الحدیث مولانا سید محمد گوہر شاہ،سابق ایم پی اے شیخ الحدیث مولانا محمد ادریس اور جے آئی یوتھ کے فواد احمد جان کے علاوہ اہل سنت و الجماعت سمیت دیگر مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں نے خطاب کیا۔مقررین نے اس قسم کے واقعات پر شدید تشویش کا اظہار کر تے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اس کا مستقل حل تلاش کیا جائے۔مظاہرین بعد میں پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔در یں اثنا مذہبی جماعتوں نے اس حوالے سے مولانا سید گوہر شاہ،مولانا غلام محمد صادق،قاری نجیب الاسلام،مفتی اکبر علی،اشفاق حان اور مولانا عبد الوہاب پر مشتمل کمیٹی قائم کی ہے جو ا س واقعے کے حوالے سے قانونی لائحہ عمل مرتب کریں گی اور اس قسم کے واقعات کے روک تھام کے لیے ضروری انتظامات کریں گی۔پڑانگ پولیس نے ملزم معروف گل کے خلاف دفعات   7ATA، 295A،295C،اور 298A کے تحت مقدمات درج کرکے انہیں گرفتار کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -