اراضی قبضہ کیس میں 4ملزموں  کی عبوری ضمانت خارج

       اراضی قبضہ کیس میں 4ملزموں  کی عبوری ضمانت خارج

  

 ملتان (خصو صی رپورٹر)ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ملتان نے بیرون ملک مقیم پاکستانی شہری کی جائیداد پر قبضہ کرنے کے مقدمہ میں ملوث ملزم کنور اقبال جیلانی (بقیہ نمبر10صفحہ 6پر)

سمیت 4 ملزمان کی عبوری ضمانت خارج کرنے کا حکم دیا ہے۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی جائیداد کو محفوظ بنانا ریاست کا کام ہے ان کے خلاف درج مقدمہ میں پولیس تفتیش کو تیز اور بہتر بنائے۔ دوسری جانب ملزمان ضمانتیں خارج ہونے پر احاطہ عدالت سے فرار ہوگئے مدعی کے وکیل رضوان سنگھیڑ نے ضلع کچہری میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ ملزمان کو جلد گرفتار کیا جائے۔ تفصیل کے مطابق مدعی کے وکیل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کا موکل اعجاز سرور لندن کا رہائشی ہے اس نے شالیمار کالونی میں 9 اور 6 مرلے کے دو مکان بنائے ہوئے جن پر ملزمان کنور اقبال جیلانی، کنور فرحان جیلانی، ہارون جیلانی اور ارسلان جیلانی نے اپنے دیگر 14، 15 ساتھیوں جن میں خواتین بھی شامل تھیں قبضہ کے لیے حملہ کیا اور پولیس موقع پر پہنچ گئی اعجاز سرور جو اس وقت پاکستان آیا ہوا تھا اس کی مدعیت میں مقدمہ درج ہوا ملزمان بااثر ہونے کی وجہ سے پولیس کے ہاتھ نہ آئے اور عدالت سے رجوع کرلیا ضمانتیں خارج ہونے کے باوجود ملزمان کی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی۔ وزیر اعلی پنجاب بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی پاکستان میں زمینوں کو تحفظ فراہم کرنے کا اعلان کریں اور اس واقعے پر نوٹس لیکر انکوائری کرائیں۔

خارج

  

مزید :

ملتان صفحہ آخر -