”ہم سلیکٹڈ حکومت اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف تحریک چلانے نکل رہے ہیں ،ایک دن بھی چین سے نہیں بیٹھیں گے“ بلاول بھٹو نے اعلان کردیا

”ہم سلیکٹڈ حکومت اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف تحریک چلانے نکل رہے ہیں ،ایک ...
”ہم سلیکٹڈ حکومت اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف تحریک چلانے نکل رہے ہیں ،ایک دن بھی چین سے نہیں بیٹھیں گے“ بلاول بھٹو نے اعلان کردیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اپوزیشن کی آل پارٹیز کانفرنس میں 26 نکاتی مشترکہ اعلامیہ جاری کردیا گیا ہے جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ احتجاج، استعفے اور تحریک عدم اعتماد تمام جمہوری اور آئینی آپشن ہیں، ہم سب متحد ہیں پوری طاقت کے ساتھ تحریک چلائیں گے،ہم کل سے اپنا کام شروع کردیں گے، ایک دن چین سے نہیں بیٹھیں گے۔

نجی ٹی وی کے مطابق اسلام آباد میں آل پارٹیز کانفرنس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول  بھٹو زرداری نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ غیر جمہوری قوتوں کا جمہوری طریقے سے مقابلہ کیا ہے،  پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کل سے اپنا کام شروع کردے گی،اب ہم اس حکومت کےخلاف تحریک چلا رہےہیں  اور ایک دن بھی چین سے نہیں بیٹھیں گے،پاکستان میں حقیقی جمہوریت ہمارا مقصد ہے،آصف زرداری،نوازشریف پوری اے پی سی میں موجودتھے اوراپنی تجویز دیتےرہے،ہم سب متحد ہیں پوری طاقت کے ساتھ تحریک چلائیں گے،صحیح وقت پر صحیح نمبرزکے ساتھ فیصلے کریں گے،ہم صاف شفاف الیکشن چاہتے ہیں،پارلیمان میں یہی آواز اٹھائیں گے،مائنس ون فارمولے کا ذکر عمران خان نے خودکیا تھا ۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم سلیکٹڈ حکومت اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف تحریک چلانے نکل رہے ہیں ،امید ہے کہ پاکستان کی عوام بھی ہمارا ساتھ دے گی تاکہ پاکستان میں حقیقی جمہوریت بحال کی جا سکے ۔ان کاکہنا تھا کہ ہم سب متحد ہیں اور ہم پوری طاقت کے ساتھ حکومت مخالف مہم چلائیں گے ،ہم آئین کے مطابق اپنا موقف سامنے رکھیں گے ،ہم نے ہمیشہ غیر جمہوری قوتوں کا جمہوری طریقے سے مقابلہ کیا ،میرے پاس بندوق نہیں ہے ،ہم بندوق کے زور پر نہ سیاست کرتے نہ احتجاج کرتے ہیں۔بلاول بھٹو نے کہا کہ مائنس ون کی بات عمران خان نے خود کی ،ہم ایک سلیکٹڈ کو ہٹا کر دوسرے سلیکٹڈ کو لانا نہیں چاہتے اور نہ ہی آئین کے تحت فوج کے ساتھ سیاسی امور پر بات چیت ہو سکتی ہے،ہم غیر سیاسی اسٹیبلشمنٹ کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔

مزید :

قومی -