سعودی عرب طالبان حکومت تسلیم کرے گا یا نہیں ؟ وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے کھل کر اپنی پالیسی بیان کردی

سعودی عرب طالبان حکومت تسلیم کرے گا یا نہیں ؟ وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان ...
سعودی عرب طالبان حکومت تسلیم کرے گا یا نہیں ؟ وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے کھل کر اپنی پالیسی بیان کردی

  

 نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے کہا ہے کہ  کشمیر بھارت اور پاکستان کا باہمی مسئلہ ہے، دونوں ممالک بات چیت سے تنازعات حل کریں،سعودی عرب طالبان حکومت تسلیم کرنے کیلئے "انتظارکرو اور دیکھو" کی پالیسی پرعمل کر رہا ہے۔

دورہ بھارت کے دوران بھارتی ٹی وی کو انٹرویو میں شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے کہاکہ افغانستان میں القاعدہ، داعش اور طالبان کا دوبارہ منظرعام پرآنا قابل فکر ہے، افغانستان سے دوسرے ممالک میں دہشتگردی پھیلنے کے خطرات پر تحفظات ہیں لیکن طالبان نے کہاہے کہ افغان سرزمین کسی دوسرے ملک میں دہشتگردی کیلئے استعمال نہیں ہوگی۔ شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے کہا کہ طالبان حکومت تسلیم کرنے کیلئے "انتظارکرو اور دیکھو "کی پالیسی پرعمل کر رہے ہیں جبکہ افغانستان میں امن و استحکام اور شمولیتی پالیسی چاہتے ہیں۔

دوسری طرف سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے نئی دہلی میں انڈین وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کی،اس موقع پر  باہمی دلچسپی کے علاقائی و بین الاقوامی مسائل اور عالمی امن و سلامتی کے فروغ میں معاون امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نےبھارتی وزیراعظم، حکومت اور عوام کے لیے شاہ سلمان بن عبدالعزیز، ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی طرف سے خیر سگالی کے جذبات پہنچائے جبکہ وزیر اعظم نریندر مودی نے شاہ سلمان بن عبدالعزیز ، ولی عہد اور سعودی حکومت اور عوام کے لیے خیر سگالی کا جوابی پیغام سعودی وزیر خارجہ کے حوالے کیا۔

مزید :

عرب دنیا -