وزیر اعظم سے پرویز رشید کی ملاقات صحافیوں کو ہر ممکن تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت

وزیر اعظم سے پرویز رشید کی ملاقات صحافیوں کو ہر ممکن تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت ...

  

                                             لاہور (آئی این پی )وزیراعظم نوازشریف سے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے ملاقات کی ، ملاقات میںملک کی موجودہ سیاسی صورتحال اور صحافیوں پر ہونے والے قاتلانہ حملوں کے بارے میں بات چیت کی گئی جبکہ وزیراعظم نے چاروں صوبائی حکومتوں کو سکیورٹی انتظامات سخت اور صحافیوں کو تحفظ فراہم کرنے کی ہدایت کر دی ۔ اتوار کو وفاقی وزیر اطلاعات و نشریاتی سینیٹر پرویزرشید نے رائے ونڈ میں وزیراعظم نوازشریف سے ملاقات کی اور انہیں سینئر صحافی حامد میر پر ہونے والے قاتلانہ حملے کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال اور صحافیوں کے احتجاج کے بارے میں آگاہ کیا جبکہ ملاقات میں ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال سمیت دیگر امور پر بھی بات چیت کی گئی دوسری طرف وزیراعظم نے تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی کہ وہ سکیورٹی احکامات کو مزید سخت کریں اور جن صحافیوں کو دہشت گردی کے خطرات ہیں ان کو ہر ممکن تحفظ اور سکیورٹی فراہم کی جائے ۔دریں اثناءکراچی کے نجی آغا خان ہسپتال میں صحافی و اینکر پرسن حامد میر کی عیادت کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراطلاعات و نشریات پرویز رشید نے کہا ہے کہ حامد میر پر حملہ کراچی میں ہوا،تحقیقات صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے،وفاق مکمل تعاون کرے گا،کچھ لوگ بندوق کے ذریعے اپنا ایہجنڈا نافذ کرنا چاہتے ہیں جن کا مقابلہ مل کر کرنا ہوگا،عدم برداشت کا کلچر ملک کے لئے نقصان دہ ہے،عامر میر کے الزامات پر بات نہیں کرنا چاہتا تفتیش میں سب کا موقف سنا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ کچھ لوگ بندوق کے ذریعے اپنا ایجنڈا نافذ کرنا چاہتے ہیں اور جمہوری کلچر کو برداشت نہیں کرتے ماضی کی غلط پالیسیوں نے جمہوریت کو کمزور کیا جمہوریت برداشت اور ایک دوسرے سے بات چیت کا کلچر ہے ، حامد میر کا عدلیہ کی آزادی ¾ جمہوریت کی بحالی اور آئین کی بالادستی کےلئے کردار کسی سے ڈھکا چھپا نہیں ہے ہمیں ان کوششوں میں ان کا ساتھ دینا ہوگا ، جو لوگ ان کی آواز کو خاموش کرنا چاہتے ہیں ہمیں ان کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ کراچی میں حامد میر پر حملہ ہوا اس حوالے سے اقدامات حکومت سندھ کی ذمہ داری ہے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ وفاق شہریوں کے تحفظ کا ذمہ دار نہیں قانونی طور پر صوبائی حکومت کو ایف آئی آر درج کرانی چاہیے تھی ۔ مجھے یقین ہے کہ صوبائی حکومت ذمہ داری کا ثبوت دے گی جہاں وفاق کی مدد کی ضرورت ہو تو وفاق پورا تعاون کرے گا تاکہ مجرموں کو بے نقاب کیا جائے اور انہیں کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ حامد میر کے بھائی کی بات ہم نے میڈیا پر سنی ہے ایف آئی آر درج ہوگی تفتیش کا عمل شروع ہوگا تو ہر ایک کا موقف سنا جائےگا ۔ انہوں نے کہاکہ بغیر کسی تحقیق کے میں ایسا کوئی لفظ نہیں کہنا چاہتا جس سے تحقیق اور تفتیش متاثر ہو پاکستان کا قانون بتاتا ہے کہ ایف آئی آر درج کرکے تفتیش کی جائے جو ذمہ دار ہو اس کے خلاف کارروائی کی جائے ۔قبل ازیں پرویز رشید نے وزیر اعظم کی ہدایت پر حامد میر کی عیادت کی اور ان کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی۔پرویز رشید نے حامد میر کے اہل خانہ سے بھی ملاقات کی اور انھیں وفاقی حکومت کی جانب سے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔

مزید :

صفحہ اول -