نشتر کالونی، گیسی غبارے پھٹنے سے 40لڑکےجھلس گئے وزیر اعلیٰ نے انکوائری کا حکم

نشتر کالونی، گیسی غبارے پھٹنے سے 40لڑکےجھلس گئے وزیر اعلیٰ نے انکوائری کا حکم ...

  

                                            لاہور(کرائم سیل) نشتر کالونی کے علاقہ کماہاں روڈ پر گیسی غبارے پھٹنے سے پارک میں کرکٹ کھیلتے ہوئے چالیس کے قریب لڑکے جھلس کر شدیدزخمی ہوگئے ۔واقع پر پورے علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا اور نو عمرلڑکوں کے والدین شہر کے ہسپتالوں میں دیوانہ وار پھرتے رہے ۔ زخمی ہونے والے چار لڑکوں نوید اور طاہر وغیرہ کی حالت انتہائی تشویش ناک ہونے پر میو ہسپتال جبکہ 23لڑکوں کو جناح ہسپتال اور باقی لڑکوں کودوسرے ہسپتال میں طبی امداد دی جارہی ہے ۔ واقعہ پر والدین اور اہل علاقہ سراپااحتجاج بنے رہے۔وزیر اعلیٰ پنجاب کے حکم پر خواجہ سلمان رفیق، اور راجہ عمران نذیر اور ڈی سی او لاہور نذیر اور ڈی سی او لاہور نے زخمیوں کی عیادت کی ۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے گزشتہ روز چونگی امرسدھو کے قریب والٹن فلائی اوور افتتاح کیا۔ جس میں ان کی آمد پر گیسی غبارے چھوڑے گئے اور گیسی غبارے کماہاں روڈ پر دیوکلاں کے قریب زمین کے بالکل قریب ہوا میں اڑ رہے تھے کہ وہاں پارک میں کرکٹ کھیلتے ہوئے لڑکوں نے گیسی غباروں کو پکڑنے کے لئے دوڑ لگادی۔اور لڑکے گیسی غباروں کو پکڑنے لگے کہ گیسی غبارے زور دار دھماکے کے ساتھ پھٹ گئے۔ جس کے باعث 40سے زائد نو عمر لڑکے جھلس کر شدید زخمی ہوگئے۔ واقعہ پر پورے علاقہ میں افراتفری پھیل گئی اور وہاں پر مقامی لوگوں نے جھلس کر زخمی ہونے والے لڑکوں کو جنرل ہسپتال پہنچانے کی کوشش کی اور اس دوران ریسکیو1122کی گاڑیاں بھی موقع پر پہنچ گئیں۔ زخمیوں کو جنرل ہسپتال پہنچایا گیا۔ تو ہسپتال میں جھلسنے کے مریضوں کے لئے کوئی بندوبست نہ ہونے پر23 زخمیوں کو جناح ہسپتال شفٹ کردیا گیا ۔ جبکہ جنرل ہسپتال سے مزید چار لڑکوں کی حالت تشویش ناک ہونے پر انہیں میو ہسپتال میں شفٹ کردیا گیا واقعہ کی اطلاع ملتے ہی لڑکوں کے والدین اور علاقے کے لوگوں کی ایک بڑی تعداد جنرل ہسپتال اور جناح ہسپتال پہنچ گئی وہاں پر ہسپتالوں کے عملہ اور انتظامیہ کی جانب سے زخمیوں کے علاج معالجہ میں تاخیر پر والدین اور اہل علاقہ نے احتجاج کیا۔اس موقع پر خواجہ سلمان رفیق اور خواجہ عمران نذیر نے کہا کہ واقع کی انکوائری کروائی جائے گی۔ اور انہوں نے بتایا کہ غبارے وزیر اعلیٰ کے افتتاح والے نہیں تھے۔ دوسری جانب وزیر اعلیٰ پنجاب نے بھی واقعہ کی انکوائری کا حکم دے دیا اور ڈی سی او لاہور سے رپورٹ طلب کرلی ہے جبکہ ایس پی ماڈل ٹاﺅن طارق عزیز نے پاکستان کو بتایا کہ غباروں کے ٹکڑے اکٹھے کرکے فرانز تک سائنس لیبارٹری بھیجوادیئے گئے ہیں ادویات سے رپورٹ آنے پر اصل حقائق سامنے آئیں گے ۔

مزید :

صفحہ اول -