کیا سانپوں کو تیرنا آتاہے؟جواب جان کر آپ بھی سوچنے پر مجبورہو جائیں گے

کیا سانپوں کو تیرنا آتاہے؟جواب جان کر آپ بھی سوچنے پر مجبورہو جائیں گے
کیا سانپوں کو تیرنا آتاہے؟جواب جان کر آپ بھی سوچنے پر مجبورہو جائیں گے

  

نیویارک(نیوزڈیسک)اگر آپ کو دریا،سمندر،ندی یا جھیل میں نہانے کے شوقین ہیں توآپ کے لئے ایک بری خبر یہ ہے کہ سانپ بھی تیر سکتے ہیں۔حقیقت میں تمام سانپ ہی پانی میں تیر سکتے ہیں لیکن کچھ زیادہ دیر سانپ پانی کے نزدیک رہتے ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کے ذہن میں یہ بات سرائیت کرچکی ہے کہ سانپوں کی چندقسمیں ہی تیر سکتی ہیں اور اکثر خشکی میں رہنا پسند کرتی ہیں۔

مزیدپڑھیں:وہ شہر جہاں سڑکیں بے انتہا کشادہ ہیں لیکن گاڑی کامالک کو ئی نہیں

سانپ اپنے چھریرے بدن کی وجہ سے پانی میں اپنے آپ کو حرکت دیتے ہوئے آگے بڑھتا ہے ۔یہ حرکت سانپ کے سر سے شروع ہوتی ہے اور پیچھے کی جانب سفر کرتی ہے جس کی وجہ سے سانپ پانی میں Sشکل میں تیرتا ہے۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ سانپ اتنا خطرناک نہیں جتنا عمومی طور پر سمجھا جاتا ہے اور اہم ترین بات یہ ہے کہ چاہے سانپ جتنا بھی جارحانہ موڈ میں ہو، اس کی کوشش یہی ہوگی کہ وہ کسی کو ڈنگ نہ مارے اور اگر ڈنگ مارنے کی نوبت آئے تو وہ اپنے دشمن کو پھنکار کر خبردار بھی کرتا ہے۔دنیا میں موجود سانپوں کی قسموں میں 80فیصد خطرناک نہیں ہے اور اگر ان میں سے کوئی کاٹ بھی لے تو موت واقع ہونے کا امکان کم ہوتا ہے۔اکثر سانپ اگر کاٹ لیں تو وہ انسان کے جسم میں زہر داخل نہیں کرتے بلکہ صرف کاٹ کر اپنا غصہ نکال لیتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس