انٹرنیٹ کے معروف بچے نے ناممکن کو ممکن بنادیا

انٹرنیٹ کے معروف بچے نے ناممکن کو ممکن بنادیا
انٹرنیٹ کے معروف بچے نے ناممکن کو ممکن بنادیا

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) انٹرنیٹ کے معروف بچے نے ناممکن کو ممکن بناتے ہوئے اپنے باپ کے علاج کے لئے ایک لاکھ ڈالر (تقریباً ایک کروڑ پاکستانی روپے) اکٹھے کرلئے ہیں۔ آٹھ سالہ بچے ’سیمی گرانر‘ کی تصویر کو دنیا بھر میں اس وقت شہر ملی جب وہ دو سال کا تھا اور اسے ’کامیاب بچے‘ کا خطاب بھی ملا۔ اس کے والد جسٹن گرانر نے اس کی یہ تصویر اتاری تھی لیکن 2006ء میں اس کے والد کو گردوں کی تکلیف ہوگئی اور 2009ء میں اس کے دونوں گردے ناکارہ ہوگئے۔ جسٹن گرانر کی بیوی ’لینی‘ نے بتایا کہ جسٹن کے علاج کے لئے بہت بڑی رقم کی ضرورت ہے۔ اگر اس کے ناکارہ گردے کی جگہ کوئی دوسرا گردہ لگایا جائے تو اس پر بھی ہزاروں ڈالر خرچ آتا ہے۔ اس کے ساتھ ادویات کا خرچ علیحدہ ہے۔ اس کا کہنا تھا کہ اتنی بری رقم کا بندوبست کرنا ان کے خاندان کے لئے ممکن نہ تھا اور اس بات کو سامنے رکھتے ہوئے ان کے بیٹنے ’سیمی‘ نے GoFundMe نامی آن لائن تحریک کا آغاز کیا جس میں اس نے لوگوں سے انٹرنیٹ پر مدد کے لئے اپیل کی۔ اس آن لائن تحریک کا مقصد جسٹن کے لئے 75 ہزار ڈالر (تقریباً 75 لاکھ پاکستانی روپے) اکٹھے کرنا تھا لیکن دو ہفتے کے عرصے میں انہوں نے ایک لاکھ ڈالر اکٹھا کرلیا۔ جسٹن کی بیوی نے تمام عطیہ دینے والے افراد کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے سیمی کی کمپین پر دل کھول کر عطیات دئیے اور ناممکن کو ممکن بنادیا۔ اس کا کہنا تھا کہ ہم نے خواب میں بھی نہ سوچا تھا کہ اس قدر رقم اکٹھی کی جاسکتی ہے لیکن انٹرنیٹ اور ان کے بیٹے کی بدولت یہ کامیابی ملی۔

مزید : علاقائی