امریکہ میں دہشتگردی نیٹ ورک کے چھ ارکان گرفتار

امریکہ میں دہشتگردی نیٹ ورک کے چھ ارکان گرفتار

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف)ایف بی آئی نے اتوار کے روز امریکی ریاست منی سوٹا کے شہر منا پولس اور کیلیفورنیا ریاست کے شہر سان ڈیگو سے دہشتگردی نیٹ ورک کے چھ ارکان کو گرفتار کر لیا ہے ۔ صومالیہ نسل کے یہ تمام باشندے امریکی ریاست منی سوٹا کے رہنے والے تھے جن میں 21سالہ محمد عبد حامد فرح، 19سالہ عدنان عبد حامد فرح ،21سالہ عبدالرحمن یسین داؤد، 19سالہ ذکریا یوسف عبدالرحمن،19سالہ مصطفی موسی اور 20سالہ علی عمر شامل ہیں ۔ ان تمام افراد کو جوآپس میں رشتہ دار ہیں کو منی سوٹا کی وفاقی عدالت میں پیش کر دیا گیا ۔ ریاست کے اٹارنی جنرل نے اس موقع پر بتایا کہ ان افراد نے داعش اور الشباب جیسی دہشتگرد تنظیموں کیلئے بھرتی کا ایک نیٹ ورک قائم کر رکھا تھا ۔ یہ افراد آپس میں خفیہ طور پر ملتے تھے جو شام میں داعش کی مدد کیلئے سفر کرنے کی تیاری میں مصروف تھے کہ پکڑ لئے گئے ۔ ایف بی آئی کے مطابق ان افراد نے منا پولس ، سان ڈیگو یا نیو یارک سے شام کے ہمسایہ ممالک تک ہوائی سفر کرنا تھا جس کے بعد انہوں نے ملک شام میں داخل ہونے کی کوشش کرنی تھی ۔ ایف بی آئی کا کہنا ہے کہ پچھلے سال بھی ان کے چند ساتھی داعش کی مدد کیلئے شام گئے تھے جن میں سے ایک ہلاک بھی ہو گیا تھا ۔ انٹیلی جنس ذرائع کے مطابق منی سوٹا ریاست کے شہر منا پولس میں صومالیہ کے تارکین وطن بھاری تعداد میں رہتے ہیں جہاں دہشتگردی کے کئی نیٹ ورک کام کر رہے ہیں ان پکڑے جانے والے افراد کا ایک ساتھی احمد علی عمر دسمبر 2007ء میں منی سوٹا سے الشباب کی مدد کیلئے گیا تھا۔ دہشتگردی نیٹ ورک

مزید : صفحہ آخر