ہوائی فائرنگ پر دو دلہے سسرال کی بجائے تھانے پہنچ گئے

ہوائی فائرنگ پر دو دلہے سسرال کی بجائے تھانے پہنچ گئے

 اوکاڑہ(بیورو رپورٹ)شادی کی تقریبات میں ہوائی فائرنگ روکنے کے لئے ڈی پی او اوکاڑہ کے سخت اقدامات۔دو دولہے سسرال کے گھر پہنچنے کی بجائے تھانے کی حوالات میں پہنچ گئے۔ایک دولہے کے رشتہ دار بھی گرفتار۔دونوں دولہوں سمیت فائرنگ کرنے والوں کے خلاف مقدمات درج۔تفصیلات کے مطابق اوکاڑہ ضلع میں شادی کی تقریبات میں ہوائی فائرنگ کے واقعات کی روک تھام کے لئے ڈی پی او اوکاڑہ فیصل رانا نے انتہائی سخت اقدامات شروع کر رکھے ہیں۔گزشتہ روز تھانہ حجرہ کی حدود میں دو مرتبہ شادی کی دو مختلف تقریبات میں فائرنگ ہوئی۔ایک واقعہ میں دو بچے طیب اور سیف اللہ زخمی ہوئے جبکہ تقریباً 12گھنٹوں کے وقفے سے دوسری مرتبہ قصبہ فتیانہ میں مہندی کی تقریب کے دوران ہوائی فائرنگ ہوئی۔ڈی پی او اوکاڑہ فیصل رانا دونوں مرتبہ اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچے اور اپنی نگرانی میں پہلے واقعہ میں دو بچوں کو زخمی کرنے والے ملزم جاوید اور اس شادی کے دولہا ساجد کو گرفتار کر لیا۔دوسرے واقعہ میں مہندی کی تقریب میں فائرنگ کرنے والے ملزمان دولہا عارف اوکا والد سلطان رشتہ دار عبد الغفار عامر امانت اور وزیر علی کو گرفتار کر کے ملزمان کے خلاف مقدمات درج کر لئے گئے۔اس طرح دونوں دولہے ہوائی فائرنگ کئے جانے کی وجہ سے سسرال جانے کی بجائے حوالات پہنچ گئے۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ دولہوں کی رہائی کے لئے ڈی پی او اوکاڑہ کو سفارشین آنا شروع ہو گئیں ۔تاہم ڈی پی او کا کہنا تھا کہ شادی کی تقریبات میں کسی صورت فائرنگ برداشت نہیں کی جائے گی جن شادیوں میں فائرنگ ہو گی انکے دولہوں کو بھی فائرنگ کرنے والوں کو گرفتار کر لیا جائے گا۔

مزید : علاقائی