امریکہ نے نئے جنگی جہاز یمن کے پانیوں میں روانہ کر دیے

امریکہ نے نئے جنگی جہاز یمن کے پانیوں میں روانہ کر دیے
امریکہ نے نئے جنگی جہاز یمن کے پانیوں میں روانہ کر دیے

  

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی بحریہ نے طیارہ برادر اور نئے جنگی بحری بیڑے اور میزائلوں سے لیس بحری جہاز یمن کے پانیوں میں راوانہ کر دیے ہیں جس کی تصدیق امریکی دفاعی ادارہ ’پنٹا گون ‘نے کر د ی ہے ۔ویب سائٹ العربیہ کے مطابق امریکی وزارت دفاع کے ترجمان کا کہناہے کہ بیڑے بھیجنے کا مقصد یمن میں جاری لڑائی کی سعت اختیار کرنے کی صورت میں خطے میں امریکی مفادات کا تحفظ یقینی بنایا جا سکے ۔

العریبہ کا کہناہے کہ امریکہ کی جانب سے جنگی بحری جہازوں کو صرف دفاعی نقطہ نظر سے یمن بھیجاجا رہاہے اور امریکا کی جانب سے یمن میں کسی قسم کی فوجی کارروائی کا امکان بہت کم ہے ۔جنگی جہازوں کی یمن کے سمندر میں روانگی کا مقصد خطے میں بحری ٹریفک کی روانی کو یقینی بنانا اور بحریک جہازوں کی معمول کی نقل وحرکت کا تحفظ ہے ۔

امریکی محکمہ دفاع کے جمان کرنل اسٹیف وارین نے خبروں کی تردید کہ جنگی بحری جہاز ایران کے ان بحری جہازوں کو روکنے کے لیے بھیجے گئے ہیں جو مبینہ طورپر یمن میں حوثی باغیوں کو اسلحہ مہیا کررہے ہیں۔

العربیہ کی نامہ نگار کا کہنا ہے کہ امریکی بحری بیڑے تھیوڈور روزویلٹ اور نورمینڈی کے ساتھ شامل کیے گئے ہیں جو اتوار کے روز خلیج عرب سے بحر عرب کی طرف روانہ ہوئے تھے۔ خیال رہے کہ امریکا کے دو بحری بیڑوں کے ساتھ معاونت کے لیے ساتھ جنگی جہاز پہلے سے موجود ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں