ٹویٹر نے غیر امریکی صارفین کیلئے پرائیویسی پالیسی تبدیل کرلی

ٹویٹر نے غیر امریکی صارفین کیلئے پرائیویسی پالیسی تبدیل کرلی
ٹویٹر نے غیر امریکی صارفین کیلئے پرائیویسی پالیسی تبدیل کرلی

  

نیویارک (ویب ڈیسک) ٹویٹر نے ایک بلاگ پوسٹ میں کہا ہے کہ وہ غیر امریکی صارفن کیلئے اپنی پرائیویسی پالیسی اور خدمات کی شرائط تبدیل کررہا ہے۔ نئی پالیسی کا اطلاق 18 مئی سے ہوا۔ اس پالیسی کے تحت غیر امریکی صارفین کے اکاؤنٹس ڈبلن میں واقع ٹویٹر انٹرنیشنل کمپنی کے تحت آپریٹ ہوں گے اور ان پر آئر لینڈ کے پرائیویسی اور ڈیٹا پروٹیکشن ڈائریکٹو کی بنیاد پر بنائے گئے ہیں۔ یورپی یونین ابھی تک ان ڈائریکٹو کو اپ ڈیٹ کررہا ہے۔ ایک مجوزہ قانون کے تحت صارفین اپنا ذاتی ڈیٹا شیئر کرنے سے پہلے اپنی مرضی بتائیں گے۔ یہ حق خود فراموشی کو وسیع کرنے کی طرف قدم بھی ہے جس کیلئے آخری ووٹ اس سال کسی بھی وقت آنے کی توقع ہے۔ یورپی یونین نے گوگل کو بھی حق خود فراموشی کے قوانین کی پاسداری کرنے کا کہا تھا مگر گوگل نے ڈاٹ کام ڈومین پر ان کا اطلاق نہیں کیا۔ امریکی صارفین کے ٹویٹر اکاؤنٹ بدستور سان فرانسسکو کیلیفورنیا میں ٹویٹر ان کارپوریشن کے تحت امریکی قوانین کے مطابق ہی آپریٹ ہوں گے اور پرائیویسی پالیسی کا اطلاق ڈیجٹس اور پیری سکوپ پر بھی ہوگا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس