عظیم آسٹرین ایم ایم اے فائٹر نے اسلام قبول کر لیا

عظیم آسٹرین ایم ایم اے فائٹر نے اسلام قبول کر لیا

  

ویانا(مانیٹرنگ ڈیسک)آسٹریا کے مشہور مکس مارشل آرٹس فائٹر ول ہیلم اوٹ نے کورونا وائرس کے بحران کے دوران 'سچ' کو تلاش کرتے ہوئے اسلام قبول کر لیا۔مکس مارشل آرٹس(ایم ایم اے) کے 37سالہ آسٹرین فائٹر ول ہیلم اوٹ نے انسٹا گرام پوسٹ پر اعلان کیا کہ وہ کلمہ شہادت پڑھ کر مسلمان ہو گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس نے مجھے اتناوقت دیا کہ میں اپنے ایمان کو ڈھونڈ سکوں، میرا ایمان اب اتنا مضبوط ہے کہ میں میں ایک اللہ جو جان کر اور کلمہ شہادت پڑھ کر فخریہ طور پر یہ کہہ سکتا ہوں کہ اب میں مسلمان ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ میں نے خود پر سیاسی چیزوں کو حاوی ہونے دیا لیکن جب میں مشکل وقت سے گزر رہا تھا تو اسلام کی ایمان کی دولت نے مجھے قوت و مضبوطی فراہم کی۔اوٹ نے بتایا کہ وہ کئی سالوں سے اسلام پر تحقیق کررہے تھے اور اس معاملے میں مداحوں کی جانب سے مکمل سپورٹ کرنے پر ان سے اظہار تشکر کیا۔اس موقع پر انہوں نے ترکی سے تعلق رکھنے والے ساتھی ایم ایم اے فائٹر براق کزلرمک کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے انہیں قرآن مجید اور جائے نماز کا تحفہ دیا تھا۔اوٹ نے مسلم برادری کی جانب سے اسلام کی قبولیت پر انہیں کھلے دل سے تسلیم کرنے شکریہ ادا کرتے ہوئے تصدیق کی کہ وہ اس سال رمجان میں پہلی مرتبہ روزہ رکھیں گے۔دی امیزنگ کے نام سے مشہور عظیم آسٹرین فائٹر 1982 میں پیدا ہوئے اور وہ اس وقت 615ایکٹو ریسلرز کی رینکنگ میں 74ویں نمبر پر موجود ہیں۔

قبول اسلام

مزید :

صفحہ اول -