طویل لاک ڈاؤن کی متحمل ملکی معیشت نہ غریب طبقہ: شاہ محمود قریشی

طویل لاک ڈاؤن کی متحمل ملکی معیشت نہ غریب طبقہ: شاہ محمود قریشی

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ پاکستان کی معیشت طویل لاک ڈاؤن برداشت نہیں کر سکتی، طویل لاک ڈاؤن سے ملک میں غربت کی سطح میں اضافہ ہوگا۔تفصیلات کے مطابق وزیر خارجہ شاہ محمودقریشی نے پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا پارلیمانی کمیٹی بھرپور انداز میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے، کمیٹی کو طویل دورانیہ پالیسیوں کیلئے تجاویز پیش کرنا چاہیے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ لاک ڈاؤن پرصوبوں کے تجربات سے آئندہ کی پالیسی مرتب کرناہوگی، صحت اور معیشت کے درمیا ن توازن پیدا کرنا ہوگا، ملکی معیشت طویل لاک ڈاؤن برداشت نہیں کر سکتی،ورنہ غربت کی سطح میں اضافہ ہوگا۔ اللہ کا شکرہے پاکستان میں کرونا وائرس سے اموات کی شرح کم ہے، صنعت کار، تاجر برداروی لاک ڈاؤن سے تیزی سے متاثر ہو رہے ہیں، غریب طبقہ لاک ڈاؤن سے شدید متاثر ہو رہا ہے، ڈاکٹرز کو حفاظتی کٹس کے حوالے سے پالیسی کا ازسر نو جائزہ لیا جائے، لاک ڈاؤن سے بچوں کی دماغی صحت، تعلیم کا نقصان ہو رہا ہے۔ وزیر خارجہ نے کہا ماہ رمضان میں سماجی فاصلوں کا خصوصی خیال کرنا ہوگا، دینی فرائض کیساتھ صحت، بیماری کا پھیلاؤ روکنے کیلئے خود اقدامات کرنا ہوں گے، حکومت محدود وسائل میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے۔بعدازاں وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے افغانستان کے قائم مقام وزیر خارجہ حنیف آتمر سے ٹیلیفونک رابطہ کر کے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے،دو طرفہ تعلقات اور علاقائی امن و استحکام کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔وزیر خارجہ نے حنیف آتمر کو افغانستان کے قائم مقام وزیر خارجہ کا منصب سنبھالنے پر مبارکباد دیتے ہوئے توقع ظاہر کی کہ ان کی موجودگی میں، پاک افغان دو طرفہ تعلقا ت کو فروغ ملے گا۔ پاکستان اہم ہمسایہ کے طور پر افغانستان کیساتھ اپنے دو طرفہ تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے۔ موجودہ وبائی صورتحال کے پیش نظر، پاکستان نے افغانستان کی درخواست پر، افغان باشندوں اور مال بردار کنٹینرز کی نقل و حرکت کیلئے بہت سے اقدامات کئے۔ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا توقع ہے پاک افغان دو طرفہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے اے پیپس (APAPPS) کا اگلا اجلاس جلد منعقد ہو گا۔ پاکستان، افغان امن عمل میں اپنا مصالحانہ کردار، خلوص نیت سے ادا کرتا رہے گا۔ امریکہ طالبان امن معاہدہ کی صورت میں، افغان قیادت کے پاس ایک نادر موقع ہے کہ وہ افغانستان میں دیرپا امن و استحکام کو یقینی بنانے کیلئے مشترکہ کاوشیں بروئے کار لا سکتے ہیں۔ پاکستان، ایک مضبوط، متحد، مستحکم، خوشحال و پر امن افغانستان کے قیام کیلئے معاونت جاری رکھے گا۔دریں اثناء وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے متحدہ امارات کے ہم منصب شیخ عبداللہ بن زاید آل نہیان سے ٹیلی فونک رابطہ کرکے پاکستانی قیدیوں کی رہائی پر ان کا شکریہ ادا اور دو طرفہ تعلقات، کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔ اماراتی وزیر خارجہ نے کہا کہ کرونا کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے پاکستان کے بروقت اقدامات قابل تحسین ہیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے انھیں کہا کہ متحدہ عرب امارات سے پاکستانیوں کی واپسی کا کل سے آپریشن شروع کیا جائے گا جو 28 اپریل تک جاری گا۔ ہر ہفتے 5000 پاکستانیوں کو واپس لایا جائے گا۔شاہ محمود قریشی نے اپنے منصب کو کشمیر کی صورتحال اور بھارت بھر میں مسلمانوں پر ہونیوالے مظالم سے اماراتی وزیر خارجہ کو آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ مودی سرکار اس عالمی وبا کو بھی مذہبی رنگ دینے کے درپے ہے۔ دونوں وزرائے خارجہ نے عالمی چیلنج سے نمٹنے کیلئے مشترکہ کاوشیں جاری رکھنے کا فیصلہ کیا۔

شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -