ٹیلی میڈیسن سنٹرزپر حاملہ خواتین کو بھی مفید مشورے ملیں گے

ٹیلی میڈیسن سنٹرزپر حاملہ خواتین کو بھی مفید مشورے ملیں گے

  

لاہور (جنرل رپورٹر) کورونا کی وبا کے دوران ٹیلی میڈیسن سینٹرز اب حاملہ خواتین، زچہ بچہ اور 5سال سے کم عمر بچوں کی صحت کے حوالے سے بھی عوام کو ٹیلی فون اور وڈیو کال کے ذریعے مفت مشورے فراہم کریں گے۔ اس حوالے سے گزشتہ روز یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں ایک سہ فریقی معاہدے پر دستخط کیے گئے۔ معاہدہ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز، پنجاب پاپولیشن انوویشن فنڈ اور ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے درمیان ہوا۔معاہدہ پر وی سی یو ایچ ایس پروفیسر جاوید اکرم، سی ای او پنجاب پاپولیشن انوویشن فنڈ جواد احمد قریشی اور صدر ڈبلیو سی سی اینڈ آئی لبنیٰ بھایات نے دستخط کیے۔ معاہدے کے تحت یو ایچ ایس ٹیلی میڈیسن سنٹر پر کام کرنے والے ڈاکٹرز ضرورت پڑنے پر ایسے کیسز کو پنجاب پاپولیشن انوویشن فنڈ کے پاس ریفر کریں گے۔ مزید برآں فیملی پلاننگ کے حوالے سے بھی مشورے فراہم کیے جائیں گے۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں وائس چانسلر یو ایچ ایس پروفیسر جاوید اکرم نے کہا کہ دنیا مشکل وقت سے گزر رہی ہے۔ تاہم ان مشکلات میں ہی مواقع چھپے ہوتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ہسپتالوں کے ڈیٹا کو صحیح طریقے سے استعمال کرنے کیلئے ہیلتھ انفارمیٹکس میں ڈگری شروع کررہے ہیں۔جواد احمد قریشی نے کہا کہ ٹیلی میڈیسن کے پلیٹ فارم کو زچہ بچہ کی صحت کو فروغ دینے کیلئے استعمال کیا جائے گا۔ صدر ویمن چیمبر آف کامرس لبنیٰ بھایات نے کہا کہ کورونا کی وبا کے دوران عوام کو ٹیلی میڈیسن کی صورت میں ایک سستا طریقہ علاج میسر آیا ہے۔ اس کا سہرا یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے سر جاتا ہے۔ بعدازاں ٹیلی میڈیسن پر کام کرنے والے ڈاکٹرز کیلئے تربیتی کورس کا انعقاد کیا گیا۔تقریب میں ڈاکٹر شہلا جاوید اکرم، پروفیسر ناصر شاہ، ڈاکٹر انیقہ محمد، آمنہ اخشید اور علی عمران نے شرکت کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -