لاک ڈاؤن: انسانی سمگلنگ میں ایمبولینس کا استعمال، چیکنگ کے دوران مردہ اٹھ بیٹھا

لاک ڈاؤن: انسانی سمگلنگ میں ایمبولینس کا استعمال، چیکنگ کے دوران مردہ اٹھ ...

  

حب (مانیٹرنگ ڈیسک)لاک ڈاؤن کی وجہ سے ٹرانسپورٹ کی بندش کے بعد کراچی سے انسانی اسمگلنگ میں ایمبولینس کے استعمال کا انکشاف ہوا ہے۔ بلوچستان سے حب کے راستے گٹکے کی اسمگلنگ میں بھی ایمبولینس پکڑی گئی ہیں اور اب لاک ڈاؤن میں ٹرانسپورٹ کی بندش کی وجہ سے کراچی سے ایک جعلی لاش ظاہر کرکے درجن بھر افراد کی ایمبولینس کے ذریعے دیپالپور جانے کی کوشش گڈاپ پولیس نے ناکام بنا دی۔ڈی ایس پی گڈاپ لال بخش سولنگی کے مطابق گزشتہ روز سے ایمبولینسز کے غلط استعمال کی بناء پر انہوں نے موٹر وے کے گڈاپ ٹول پلازہ پر کراچی سے جانے والی ایک ایمبولینس کو چیکنگ کے لیے روکا۔ معلومات کرنے پر ایمبولینس ڈرائیور نے ایک ڈیتھ سرٹیفیکیٹ دکھایا اور کراچی کے مقامی اسپتال سے میت کو پنجاب کے شہر دیپالپور لے جانے کا کہا۔ڈی ایس پی گڈاپ لال بخش سولنگی کے مطابق انہیں شک گزرا جس پر انہوں نے شلوار قمیض میں ملبوس لاش کی کلائی پکڑ کر چیک کیا تو مردہ ظاہر کیے گئے شخص کی سانس چل رہی تھی۔مزید پوچھ گچھ کے دوران مذکورہ شخص مردہ ہونے کا ڈھونگ برقرار نہ رکھ سکا اور اٹھ کر بیٹھ گیا۔ پولیس کی ابتدائی تفتیش کے مطابق کراچی کے آمنہ عبداللہ اسپتال سے مذکورہ ایمبولینس 52 ہزار روپے کرائے پر بک گئی تھی۔پولیس نے بتایا کہ ملزمان کے قبضے سے اعجاز نامی شخص کا ڈیتھ سرٹیفیکٹ بھی برآمد ہوا ہے۔

مردہ اٹھ بیٹھا

مزید :

صفحہ آخر -