ایس او پی کے نام پر بدمعاشی برداشت نہیں کرینگے،ڈاکٹر سلیم حیدر

  ایس او پی کے نام پر بدمعاشی برداشت نہیں کرینگے،ڈاکٹر سلیم حیدر

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر) مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کراچی کورنگی انڈسٹریل ایریا کی صنعتوں کو جان بوجھ کر بند کرنے اور بعد میں اسے غلطی قرار دینے کو صوبائی حکومت کی کراچی اور مہاجر دشمنی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ کے دیہاتی حکمران ایس او پی کے نام پر کراچی کے صنعتکاروں، تاجروں کو ہراساں کررہے ہیں انہیں کاروبار ختم کرنے پر مجبور کیا جارہا ہے۔ وہ کراچی کے صنعتکاروں اور تاجروں سے ٹیلیفون پر گفتگو کررہے تھے۔ ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہاکہ کورونا وائرس کی آڑ میں جس طرح کراچی اور حیدرآباد کے تاجروں کو معاشی بدحالی اور فاقہ کشی پر مجبور کیا گیا ہے وہ پیپلزپارٹی کی پرانی تاریخ ہے۔ پیپلزپارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو نے بھی سندھ کے مہاجر صنعتکار اور تاجروں جبراً صنعتیں چھین کر انہیں نیشنلائز کیا اور بعد میں ان میں دیہی علاقوں کے سندھیوں کو بھرتی کیا۔ ایک بار پھر پیپلزپارٹی کی متعصب صوبائی حکومت اسی تاریخ کو دہرارہی ہے۔ ایک ماہ سے کراچی کی صنعتوں اور تجارت کا پہیہ جام کرکے رکھ دیا گیا ہے۔ لاک ڈاؤن کے نام پر کراچی اور حیدرآبا دکے مہاجروں کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جارہا ہے۔ ہم حکومت کی کسی ایس او پی اور اس طرح کے لاک ڈاؤن کو تسلیم کرنے کو تیا رنہیں۔ صوبائی حکومت اپنا قبلہ درست کرے ورنہ پھر پورے کراچی میں شدید احتجاج کیا جائے گا۔ یہ حکومت جو مہاجروں کے ٹیکسوں پر پلتی ہے مہاجروں کا ہی گلہ گھونٹنے میں مصروف ہے۔ کراچی جو پورے ملک کو پالتا ہے اس کو جان بوجھ کر تباہ کیا جارہا ہے اس کا مقصد ایک طرف مہاجروں کو تباہ کرنا اوردوسری طرف ملک کو دیوالیہ کرنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ،پاکستان کی اسٹیبلشمنٹ اور مقتدر حلقے اس صورتحال کا نوٹس لیں ورنہ پھر اس دیہی حکومت کو چلنے نہیں دیں گے۔ انہوں نے کہاکہ جب سے یہ حکومت برسراقتدار آئی ہے کراچی کا پیسہ دیہی علاقوں میں ترقی کے نام پر خرچ کیا جارہا ہے یا پھر بیرون ملک منتقل کیا گیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان جو کرپٹ اور بدعنوان افراد کا احتساب کرنے کی بات کررہے تھے انہیں یہ کرپٹ اور لٹیرے حکمران نظر نہیں آرہے جو سندھ کے شہری علاقوں کو تباہ کرنے میں مصروف ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -