حکومت کاایک اور شعبے کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کا فیصلہ

حکومت کاایک اور شعبے کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کا فیصلہ
حکومت کاایک اور شعبے کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کا فیصلہ

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان کی حکومت نے آٹا چینی بحران کی رپورٹ پبلک کرنے کے بعد ایک اور شعبے کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کااعلان کیاہے۔ آج ہونے والے اجلاس میں وفاقی کابینہ نے پاور سیکٹر سے متعلق انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق اجلاس میں تعمیراتی شعبے کو سیلز ٹیکس کی چھوٹ دینے کی منظوری دی گئی۔ پراپرٹی ڈیلرزپر عائد ٹیکس ختم کردیا گیاہے۔

ذرائع کے مطابق کابینہ نے ریٹائرمنٹ کے بعد سرکاری رہائشگاہ سے متعلق پالیسی پر نظرثانی کی بھی منظوری دی، وقت سے پہلے ریٹائر ہونے والے ملازمین 6 ماہ سے زیادہ سرکاری رہائش استعمال نہیں کر سکیں گے۔کابینہ نے مسابقتی کمیشن کی تشکیل نو سے متعلق سفارشات کی بھی منظوری دے دی، وفاقی کابینہ نے اقلیتوں کے قومی کمیشن کی تشکیل نو کی بھی منظوری دی، کابینہ کمیٹی برائے قانون سازی اجلاس میں کیے گئے فیصلوں کی بھی توثیق کی۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ سابقی کمیشن کی چیئرپرسن کو ان کے عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیاہے۔مسابقتی کمیشن کی ازنو سر تشکیل کرکے اس کی ڈیجیٹلائزیشن کا فیصلہ کیا گیا۔کابینہ کمیٹی برائے قانون سازی کے فیصلوں کی توثیق کی گئی۔مسابقتی کمیشن ماضی میں شخصیات کو تحفظ دیتا رہا۔مسابقتی کمیشن کارٹلزکےہاتھوں کھلونابنارہا.مسابقتی کمیشن کیخلاف 27 درخواستیں دائرہوچکی ہیں۔

فردوس عاشق اعوان نے بتایا کہ کابینہ نےاوگراآرڈیننس میں ترامیم کےفیصلےکی توثیق کی۔ انہوں نے کہاعوامی مفادات کےتحفظ کیخلاف پالیسیاں قابل قبول نہیں ہوں گی۔

فردوس عاشق اعوان کے مطابق کابینہ کی اقلیتوں کےقومی کمیشن کی تشکیل نوکی منظوری دے دی گئی ہے۔قیام اوراستحکام پاکستان میں اقلیتوں کااہم کردار ہے۔ قومی کمیشن میں اقلیتی برادری سےہی چیئرمین منتخب ہوں گے۔ اس سےپہلےقومی کمیشن کےچیئرمین اقلیت سےنہیں تھے۔ قومی کمیشن میں اقلیتوں کی اکثریت ہوگی۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -