حکومت نے ایک دن میں دس ماڈل ٹاؤن کردیئے، رانا ثناء اللہ 

حکومت نے ایک دن میں دس ماڈل ٹاؤن کردیئے، رانا ثناء اللہ 

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما رانا ثنا ء اللہ نے کہاہے کہ ٹی ایل پی کو کالعدم قرار دینے کا معاملہ اپنے طور پر کیا انہوں نے ایک دن میں دس ماڈل ٹاؤن کر دیئے جن کی زبان پر لبیک یا رسول اللہ کا نعرہ تھا ان ہی پر گولیاں برسائیں،اپوزیشن کو اعتماد میں لیتے آل پارٹیز کانفرنس بلاتے تو اس کا حل نکلتا  ان خیالات کا اظہار  عدالت عالیہ میں خواجہ آصف کی پیشی کے موقع پر کیا،انہوں نے مزید کہا کہ حکومت اتنے برے طریقے سے اس معاملے کوہینڈل کیا جس سے ایسے زخم لگے جو دیر تک رہیں گے،عمران خان نے حواس باختہ ہو کر قوم سے خطاب کیا مسلم لیگ (ن)نے اب تک اس مسئلے پر اب تک صرف پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے بیان دیا اس معاملے پر ہم نے ایسی بات نہیں کی جس سے خرابی پیداہوا،ہم نے معاملے کو مزید بہتر بنانے کی کوشش کی،ہم نے تو معاملہ پارلیمنٹ میں لانے کی بات کی،حکومت نے لبیک کے ساتھ تحریری معاہدہ کیا کہ معاملہ پارلیمنٹ میں لائیں گے،حکومت نے 5ماہ تک کیوں معاہدہ پارلیمنٹ میں نہیں لایا،دو ماہ کا جو مزید ٹام لیا اس پر موجودہ وزیرداخلہ شیخ رشید کے بھی دستخط ہیں،حکومت کو اس پر جوابدہ ہونا ہے اب بھی کہتے کہ ٹی ایل پی کو دہشت گرد قرار دیا،مذاکرات نہیں کریں گے اگر حکومت نے فرانسیسی سفیر کو نکالنے پر معاہدہ کیا ہے تو اس پر عمل کیا جائے اس کے نقصانات کی ذمہ داری حکومت کی ہے تین وزرا نے معاہدے پر دستخط کئے،بتایا جائے کہ سعد رضوی کو کیوں گرفتار کیا گیا،حکومت نے جلدبازی میں تحریک کو کالعدم قراردیا  ریاست کی رٹ کا ستیا ناس کر دیاپہلے یہ خود بھی یہی کام کرتے رہے،انہوں نے خودایسی تقریریں کیں مگر ان کے خلاف کارروائی نہیں ہوئی،آپ بھی ڈی چوک میں 126 دن بیٹھے رہے ان کو بھی بیٹھے رہنے دیتے۔

راناثناء اللہ 

مزید :

صفحہ آخر -