اوپن مارکیٹ میں چینی مزید مہنگی، انتظامیہ بھی متحرک، چھاپے، متعدد دکاندار گرفتار 

اوپن مارکیٹ میں چینی مزید مہنگی، انتظامیہ بھی متحرک، چھاپے، متعدد دکاندار ...

  

ملتان، چوک اعظم، کو ٹ ادو، جتوئی(نیوز رپورٹر، نامہ نگار، تحصیل رپورٹر، نمائندہ پاکستان) کمشنر ملتان ڈویژن جاوید اختر محمودنے ممبران صوبائی اسمبلی کے ہمراہ رمضان بازار کا دورہ کیا۔انہوں نے صارفین سے اشیائے خوردونوش کے معیار اور قیمتوں بارے دریافت کیا جبکہ مختلف سٹالز پر اشیا کا معیار، ناپ تول کے پیمانے بھی چیک کئے۔ممبران صوبائی اسمبلی نے رمضان بازاروں میں انتظامات پر اطمینان کا اظہار کیا۔کمشنر ملتان جاوید اختر محمود نے کہا کہ ڈویژن میں 23، ضلع ملتان میں 11 رمضان بازار مکمل فعال کر دیے گئے ہیں۔ وزیراعلی عثمان بزدار کے حکم پر رمضان بازاروں میں 13 اشیائے ضروریہ پر25فیصد سبسڈی دی گئی.رمضان بازاروں میں عوام کا رش،حکومتی پالیسی پر اعتماد کا اظہار ہے(بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

۔کم قیمت پر بہترین کوالٹی کی اشیا کی فراہمی شہریوں کی رمضان بازاروں میں  موجودگی کا سبب ہے۔ڈویژن کے تمام رمضان بازاروں میں فئیرپرائس شاپس قائم کردی گئیں ہیں۔ کمشنر،ایم پی ایز نے بہترین انتظامات پر رمضان بازار کی انتظامیہ کی کاوش کو سراہا۔اس موقع پر ممبر صوبائی اسمبلی واصف راں نے کہا کہ حکومت پنجاب کی جانب سے اربوں روپے کی سبسڈی کے ثمرات عوام تک پہنچ رہے ہیں۔وزیر اعلی پنجاب نے ماہ صیام میں شہریوں کیلئے ساڑھے پانچ ارب روپے کا ریلیف پیکج دیا ہے۔ سلیم لابر نے کہا کہ حکومت نے سستے رمضان بازار سجا کر شہریوں کو براہ راست ریلیف دیا ہے۔ طارق عبداللہ نے کہا کہ رمضان بازاروں میں کرونا کنٹرول بارے حکومتی ایس او پیز پر عملدرآمد ضروری ہے۔ اس موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے فوکل پرسن برآئے گلگشت رمضان بازار رانا محسن نے کہا کہ فیئر پرائش شاپس پر اشیا رمضان بازاروں سے بھی کم نرخ میں میسر ہیں۔آلو فیئر پرائس شاپ پر35روپے،رمضان بازار میں 44روپے اور عام مارکیٹ میں 46 روپے فی کلو کے حساب سے دستیاب ہے.فئیر پرائس شاپس پر آلو پر11 روپے فی کلو رعائت دی جارہی ہے۔پیاز فیئر پرائس شاپس پر 13روپے، رمضان بازار20روپے اور اوپن مارکیٹ میں 22روپے فی کلو فروخت ہو رہا ہے۔فئیر پرائس شاپ پر ٹماٹر35روپے،رمضان بازار 44روپے اور اوپن مارکیٹ میں 46روپے فی کلو پر دستیاب ہے جبکہ ٹماٹر پر فی کلو11 روپے رعائت حاصل ہے۔دال چنا فئیر پرائس شاپس پر92 روپے،رمضان بازار120روپے اور اوپن مارکیٹ میں 122 روپے فی کلو میں فروخت کی جارہی ہے جبکہ فی کلو دال چنا پر30 روپے سبسڈی دی جارہی ہے۔بیسن فئیر پرائس شاپس پر92روپے،رمضان بازاروں میں 121روپے اور اوپن مارکیٹ میں 123 روپے فی کلو میں سیل کیا جارہا ہے جبکہ فئیر پرائس شاپس پر بیسن پر فی کلو 31 روپے رعائت حاصل ہے۔ان13 اشیا کے علاوہ رمضان بازاروں میں کھانے پینے کی دیگر اشیا بھی عام مارکیٹ سے بہت کم قیمت پر دستیاب ہیں۔تمام رمضان بازاروں میں آئل ملوں کی طرف سے لگائے گئے سٹالز پر عام مارکیٹ سے گھی 15 روپے فی کلو کم قیمت پر فروخت کیا جارہا ہے۔رمضان بازاروں میں چینی65 روپے فی کلو اور10 کلو آٹے کا تھیلا 375 روپے میں فروخت کیا جارہا ہے۔چینی کی قلت کا مسئلہ سنگین صورتحال اختیار کر گیا سستی چینی کے حصول کیلئے رمضان بازاروں میں شہریوں کی لمبی قطاریں برقرار  چینی اوپن مارکیٹ میں بلیک میں دوگنے داموں فروخت ہو رہی  ہے۔تفصیلات کے مطابق اوپن مارکیٹ سیچینی تاحال غائب جبکہ بیشتر دکانوں پر چینی 120روپے فی کلو میں فروخت ہورہی ہے۔چینی کا سرکاری نرخ 85 روپے فی کلو مقرر ہے تاہم اوپن ماکیٹ میں 120 سے زاہد میں فروخت کی جا رہی ہے۔ڈپٹی کمشنرعلی شہزاد کی ہدایت پر چینی کی گرانفروشی میں ملوث مافیا کے خلاف کریک ڈاون چینی 85 روپے فی کلو سے زائدقیمت پر فروخت کرنے پر4دکاندار موقع پر گرفتار کیا گیا جبکہ 8 کے خلاف مقدمہ درج کر لئے گئے ہیں۔ مقررہ قیمت سے زائد نرخ وصول کرنے پرایک دکان سے چینی کی100 بوریاں بھی قبضے میں لے لی گئیں جسے گلگشت اور ممتاز آباد میں سٹال لگا کرفی کلو85روپے کے حساب سے شہریوں کو فروخت کردی گئی۔گرانفروشوں کو 2لاکھ 4ہزار روپے جرمانہ بھی کیا گیا۔183 دکانوں پرنرخ چیک کئے گئے جن میں سے73 دکاندار زائد قیمت پر چینی کی فروخت میں ملوث پائے گئے۔صوبائی پارلیمانی سیکرٹری مواصلات سردار شہاب الدین سیہڑ نے کہا ہے کہ ضلع بھر میں کنٹرول ریٹ پرچینی کی فراہمی کو یقینی بنایاجائے،دیہی علاقوں کے دوکانداروں کو بھی کوٹہ کے مطابق بلاتعطل چینی فراہم کی جائے تاکہ متوسط طبقہ بھی حکومت کے اس اقدامات سے مستفیدہوسکیں۔انہوں نے یہ بات ڈی سی روم میں چینی کی طلب و رسدبارے بریفنگ لینے کے موقع پر کہی۔اس موقع پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرجنرل اشفاق حسین سیال،ڈی او انڈسٹری محمدعبداللہ بھی موجود تھے۔صوبائی پارلیمانی سیکرٹری مواصلات سردار شہاب الدین سیہڑنے کہا کہ حکومت پنجاب ماہ رمضان میں اپنے شہریوں کو اشیاء خورد نوش میں ہرممکن ریلیف کی فراہمی کے لیے ہرممکن اقدامات اُٹھارہی ہے جس کے تحت عوام کو ریلیف دینے کیلئے 550 کروڑ روپے کا خصوصی پیکیج دیا گیاہے رمضان بازاروں میں 10 کلو آٹے کا تھیلا 375 روپے جبکہ چینی 65 روپے کلو کے حساب سے عوام کو فراہم کی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ عام مارکیٹوں میں چینی کی مقررہ نرخ پر دستیابی یقینی بنائی جائے ضلع بھر کے پرائس کنٹرول مجسٹریٹس اشیاء خورد نوش کی مقررہ نرخوں پر فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے پرائس کنٹرول میکانزم کو مزید موثرکریں کسی کو عام آدمی کی جیب پر ڈاکہ ڈالنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔سردار شہاب الدین سیہڑ نے کہا کہ متوسط طبقہ کو ریلیف فراہم کرنا اولین ذمہ داری ہونی چاہیے ناجائز منافع خوروں اور ذخیرہ اندوزوں کیخلاف کریک ڈاؤن سے ہی مطلوبہ نتائج حاصل کیے جاسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سستے آٹے کی فراہمی پر 240 کروڑ روپے کی سبسڈی دی گئی ہے تاکہ متوسط طبقہ کو خاطرخواہ ریلیف دے کر ان کی مشکلات کم کی جاسکیں۔سردارشہاب الدین سیہڑ نے مزید کہا کہ وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے رمضان بازاروں کی مانیٹرنگ کیلئے صوبائی وزراء اور مشیران کو ذمہ داریاں تفویض کی ہیں جس کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ذخیرہ اندوزی کی جانے والی چینی کو قبضہ میں لے کر عام مارکیٹ میں فروخت کیاجائے۔اس موقع پر ڈی او انڈسٹری محمدعبداللہ نے بریفنگ دی۔حکومت پنجاب کی سخت ہدایات پر سرکاری نرخ 83 روپے فی کلو چینی فروخت نہ کرنے والے دکانداروں کے خلاف کارروائی میں تیزی آ گئی ہے، گزشتہ روز اسسٹنٹ کمشنر کوٹ ادوڈاکٹر فیاض علی جتالہ  نے آپریشن کے دوران منڈی مویشی روڈ پر گلفام کریانہ سٹور کے گلفام راجپوت، تونسہ موڑ پر مرتضی کریانہ سٹور کے مرتضی سامٹیہ، سبزی منڈی کے قریب رانا کریانہ سٹور کے رانا عثمان راجپوت، تھانہ دئرہ دین پناہ کے علاقہ احسان پور میں کلیم کریانہ سٹور کے کلیم اللہ سپل اور اڈا بہار پر ممتاز کریانہ سٹور کے ممتاز حسین مور کو گرفتار کرکے ان کے خلاف تھانہ میں استغاثے بھجوا دیے،پولیس سرکل کوٹ ادو نے تمام دکانداروں کے خلاف اسسٹنٹ کمشنر کوٹ ادو ڈاکٹر فیاض علی جتالہ کی مدعیت میں الگ الگ مقدمات درج کرلئے ہیں  تحصیل جتوئی کے لوگوں کو رمضان بازار میں سستی اشیاء  خوردونوش کی فراہمی کے لئے رمضان بازار قائم کردیا گیا ہے جہاں چینی،آٹے اور دیگر اشیاء  صرف کی خریداری کے لئے صبح سے ہی لوگوں کی بھیڑ لگ جاتی ہے۔جس پر خریداروں کی لائنیں بنا دی جاتی ہیں۔لائن لگنے کا سلسلہ صبح سے شام تک جاری رہتا ہے۔کئی گھنٹے لائن لگنے کے بعد صارف کو ایک کلوگرام چینی تھما دی جاتی ہے جبکہ دیگر اشیاء  کی عدم دستیابی کا رونا رو کر غریب صارفین کو چلتا کر دیا جاتا ہے۔ذرائع کے مطابق رمضان بازار کیلئے ٹھیکیداروں کو چینی، آٹے اور دیگر اشیا صرف پربھاری سبسڈی دی جا رہی ہے۔جس سے مافیا تجوریاں بھر رہا ہے۔عام لوگ ریلیف سے یکسر محروم ہیں۔رمضان بازاروں سے عوام اور انتظامیہ دونوں کو سبکی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔تاجروں کے روپ میں ملبوس لٹیرے سب سڈی کے نام پر ذاتی تجوریاں بھرنے میں لگے ہوئے ہیں۔اسسٹنٹ کمشنر تحصیل جتوئی اور دیگر متعلقہ افسران ممکن نہیں کہ صورتحال سے لاعلم ہوں مگر بوجوہ خاموشی کی فضا قائم ہے۔حکومت کو نیک نامی کے بجائے الٹا غریبوں کے کوسنے اور بد نامی مل رہی ہے۔عوامی و سماجی حلقوں نے اسسٹنٹ کمشنر تحصیل جتوئی، تحصیلدار جتوئی اور دیگر متعلقہ افسران سے رمضان بازار میں اشیاء  خوردونوش کی وافر مقدار میں یقینی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر سستے رمضان بازار سے صرف مخصوص لوگوں کو فایدہ پہنچانا ہی مقصود ہے تو غریب لوگوں سے کھلواڑ کے بجائے رمضان بازار بند ہی کردیا جائے۔

چینی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -