افغان امن عمل کا حصہ بنے رہنے میں طالبان کا قومی مفاد ہے: شاہ محمو د قریشی 

افغان امن عمل کا حصہ بنے رہنے میں طالبان کا قومی مفاد ہے: شاہ محمو د قریشی 

  

  اسلام آباد، ابوظہبی، تہران، (مانیٹرنگ ڈیسک،این این آئی) شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہا کہ ا فغان امن عمل کا حصہ بنے رہنے میں طالبان کا قومی مفاد ہے،پاکستان کا متحدہ عرب امارات کی جانب سے 2 ارب ڈالر امدادی قرض کی واپسی میں توسیع کے فیصلے کا خیرمقدم۔فیصلے سے دونوں ممالک کے مابین گرم جوشی پر مبنی برادر تعلقات میں مزید اضافہ ہوگا۔ ایران صرف ہمسایہ ملک نہیں بلکہ آزمایا ہوا دوست ہے، ہم نے ہر مشکل وقت میں ایک دوسرے کی معاونت کی ہے،ابوظہبی میں غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو ایران 3 روزہ سرکاری دورے پر روانگی سے قبل انٹرویو میں شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ  پاکستان طالبان پرافغان امن عمل سے وابستہ رہنے پر زور دے رہا ہے، طالبان اپنے فیصلے خود کرتے ہیں لیکن پاکستان انہیں آمادہ کرنے کی ہرممکن کوشش کرے گا۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ افغان امن عمل کا حصہ بنے رہنے میں طالبان کا قومی مفاد ہے، افغانستان سے غیرملکی فوجیوں کاانخلاء یکم مئی سے 11 ستمبر تک جاری رہیگا۔دفتر خارجہ کے مطابق ابو ظبی ترقیاتی فنڈز (اے ڈی ایف ڈی) کے ذریعے 2 ارب ڈالر امدادی قرض کی ادائیگی میں توسیع کے فیصلے پر یو اے ای کے وزیر خارجہ نے پاکستان کو ہر ممکن مدد فراہم کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔وزیر خارجہ نے اپنے ہم منصب کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے دونوں ممالک کے مابین گرم جوشی پر مبنی برادر تعلقات میں مزید اضافہ ہوگا۔ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپنے ہم منصب عبد اللہ کو پاکستان آنے کی دعوت دی، شیخ عبداللہ بن زاید النہیان نے دورہ پاکستان کی دعوت قبول کرلی۔دریں اثناء وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ایران صرف ہمسایہ ملک نہیں بلکہ آزمایا ہوا دوست ہے، ہم نے ہر مشکل وقت میں ایک دوسرے کی معاونت کی ہے۔متحدہ عرب امارات کا دورہ مکمل کرکے ایران روانگی سے قبل دورہ ایران کے مقاصد سے متعلق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ویڈیو پیغام میں کہاکہ وزیر خارجہ جواد ظریف کے متعدد بار پاکستان کے دورے پر شْکر گزار ہوں افغان امن عمل میں بہت سی نئی پیش رفت ہوئی ہے۔اْنہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر دو ٹوک موقف اختیار کرنے پر سپریم لیڈر شپ کا شْکرگزار ہوں،ایران نے پاکستان کے موقف کی ہمیشہ حمایت کی ہے۔ بعدازاں وزیر خارجہ تین روزہ سرکاری دورے پر ایران کے دارالحکومت تہران پہنچ گئے۔امام خمینی انٹرنیشنل ائیر پورٹ تہران پہنچنے پر ایرانی وزارت خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل و ایرانی وزیر خارجہ کے مشیر سید رسول موسوی، ایران میں تعینات پاکستانی سفیر رحیم حیات قریشی اور تہران میں واقع پاکستانی سفارتخانے کے سینئر افسران نے وزیر خارجہ کا پرتپاک خیر مقدم کیاوزیر خارجہ اپنے تین روزہ دورہ ایران کے دوران، ایران کے صدر حسن روحانی، وزیر خارجہ جواد ظریف سمیت اعلیٰ قیادت سے ملاقاتیں کریں گے۔دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تجارت کے فروغ کیلئے پاکستان اور ایران کے سرحدی علاقوں میں "بارڈر مارکیٹس" کے قیام کے حوالے سے بھی مفاہمتی یاداشتوں پر دستخط متوقع ہیں۔

 شاہ محمود قریشی 

مزید :

صفحہ اول -