45 سالوں سے گھر سے لاپتہ شخص 60 سال کی عمر میں چل بسا

  45 سالوں سے گھر سے لاپتہ شخص 60 سال کی عمر میں چل بسا

  

چکدرہ(تحصیل رپورٹر)45سال سے گھرسے لاپتہ مینہ بھٹان کیتیاڑی کارہائشی محمد نذیر ساٹھ سال کی عمر میں چل بسا،محمد نذیر 15سال کی عمر میں گھر سے بھاگ گیاتھاغائب ہونے کے بعد دو دفعہ بھائی کو ملالیکن پھر بھاگ  گیا، مرحوم نے عمر کازیادہ حصہ کراچی، مکران،لاہور اورایران میں گزارا،تبلیغی مرکز رائے ونڈ میں بیمار ہوااور اس کی ویڈیو سوشل میڈیاپر وائرل ہونے اس کے بھائیوں کو پتہ چلاتو وہ ملنے لاہور کے ہسپتال پہنچے، آبائی گھر لانے کے بعد پانچ روز ہسپتال میں رہنے کے بعدوہ خالق حقیقی سے جاملا،تفصیلات کے مطابق مینہ بھٹان کیتیاڑی کے رہائشی شمروز خان نامی شخص کابیٹامحمد نذیر 15سال کی عمر میں گھر سے بھاگ گیاتھا، محمد نذیر کے بھائی سید زمان اور پھوپی زاد  حاجی دوست محمد کے مطابق محمد نذیر گھر سے بھاگنے کے بعد دو دفعہ کراچی میں اپنے بھائی روزی خان کو ملاتھا لیکن وہاں سے بھی بھاگ گیاتھااور تب سے وہ عرصہ 45سال تک لاپتہ تھا، ان کے مطابق محمد نذیر نے عمر کا زیادہ حصہ کراچی،مکران اور ایران میں گزاراتھاوہ ٹی بی کامریض تھا، کچھ عرصہ قبل تبلیغی مرکز رائے ونڈ گیاجہاں اسے فالج کااٹیک ہوا  ہسپتال داخل کیاگیاچونکہ اس کے پاس شناختی کارڈ نہیں تھاتو تبلیغی مرکز میں اس کی شناخت کی پرچی رکھی جس پر اس کانام محمد نذیر ولد شمروز خان سکنہ کیتیاڑی مینہ بھٹان لکھا گیاتھاسوشل میڈیاپر ویڈیووائرل ہونے گھر والوں کو شک گزراتواس سے ملنے گئے اور وہاں مکمل شناخت ہونے پر اسے گھر لے آئے وہ چار پانچ دن بٹ خیلہ ہسپتال میں زیر علاج رہنے کے بعد ہسپتال سے گھر لاتے ہوئے راستے میں انتقال کرگیا، متوفی کے بھائی سید زمان نے کہا کہ انہیں جہاں بھائی کی وفات پر صدمہ پہنچاہے وہیں وہ اس کے ملنے پر خوش بھی ہیں کاش کہ وہ کچھ عرصہ زندہ رہتے، متوفی کو گزشتہ روز آبائی قبرستان مینہ بھٹان کیتیاڑی میں سپردخاک کیاگیااور یوں محمد نذیر کی زندگی کاباب ہمیشہ کے لئے بند ہوگیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -