وہ دیہاتی جس نے رسول اللہ ﷺ کی اونٹنی کی مہار پکڑلی، پھر کیا سوال کیا؟

وہ دیہاتی جس نے رسول اللہ ﷺ کی اونٹنی کی مہار پکڑلی، پھر کیا سوال کیا؟
وہ دیہاتی جس نے رسول اللہ ﷺ کی اونٹنی کی مہار پکڑلی، پھر کیا سوال کیا؟
سورس: Wikimedia Commons

  

حضرت ابو ایوب رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ رسول پاک ﷺ اونٹنی پر سوار ہوکر صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ عنہم کے ساتھ سفرمیں تشریف لے جارہے تھے کہ ایک بدو یعنی دیہاتی نے آکر آپ کی اونٹنی کی مہار پکڑلی اور کہا حضور ﷺ مجھے ایسا عمل بتلائیے جو مجھے جنت سے قریب اور جہنم سے دور کر دے۔ آپ ﷺ ٹھہر گئے اور صحابہ کرام رضوان اللہ تعالیٰ عنہم کی طرف دیکھ کرفرمایا :اللہ تعالیٰ کو وحدہ لاشریک جان کر اس کی عبادت کر، نماز پڑھ، زکوٰۃ دے اور صلہ رحمی کر، اب میری اونٹنی کی مہار چھوڑدے۔ جب بدو چلاگیا توآپ ﷺ نے ارشاد فرمایا اگر یہ ان باتوں پر عمل کرتا رہا تو جنت میں جائے گا۔

مزید :

Ramadan -Ramadan Quote -روشن کرنیں -