خواتین کوہراسانی سے بچانے کیلئے رکشہ ڈرائیور نے اپنی دونوں آنکھوں کی قربانی دیدی، مثال ڈھونڈنا مشکل

خواتین کوہراسانی سے بچانے کیلئے رکشہ ڈرائیور نے اپنی دونوں آنکھوں کی قربانی ...
خواتین کوہراسانی سے بچانے کیلئے رکشہ ڈرائیور نے اپنی دونوں آنکھوں کی قربانی دیدی، مثال ڈھونڈنا مشکل
سورس: Twitter

  

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک) خواتین کو ہراساں کرنے کے واقعات تو آئے روز پیش آتے رہتے ہیں تاہم معاشرے میں ایسے مردوں کی بھی کمی نہیں جو اپنی جان کی پروا کیے بغیر خواتین کی حفاظت کو اپنا فرض سمجھتے ہیں۔ یہ کہانی بھی ایک ایسے ہی رکشہ ڈرائیور کی ہے جس نے اپنی دونوں آنکھوں کی قربانی دے کر دو خواتین کو درندوں سے بچا لیا۔

 ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق اس رکشہ ڈرائیور کا نام فقیر حسین ہے جس کے رکشہ میں دو خواتین سفر کر رہی تھیں۔ وہ لوگ پشاور میں حاجی کیمپ سے گل بہار کی طرف جانے والی سڑک پر سفر کر رہے تھے۔اس دوران دو موٹرسائیکل سواروں نے ان کا پیچھا شروع کر دیا اور فقیر حسین کو رکشہ روکنے کو کہا۔ جب اس نے رکشہ نہ روکا تو انہوں نے فقیر حسین کے چہرے پر ہی تیزاب پھینک دیا، جس سے وہ بری طرح جھلس گیا اور اس کی دونوں آنکھیں ضائع ہو گئیں۔یہ واقعہ چند ماہ قبل پیش آیا تھا، جس کے بعد فقیر حسین نے ایف آئی آر رجسٹرڈ کرانے سے انکار کر دیا تھا۔

 فقیر حسین نے بتایا کہ دونوں ملزمان نے ہیلمٹ پہن رکھے تھے اور وہ ان کے چہرے نہیں دیکھ پایا تھا، جس کی وجہ سے اس نے ایف آئی آر بھی درج نہیں کرائی تھی۔رپورٹ کے مطابق فقیر حسین کے علاج کے لیے ان دنوں سوشل میڈیا پر چندہ جمع کرنے کی مہم چل رہی ہے۔ معروف سماجی کارکن مہوش اعجاز بھی اس مہم کا حصہ ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -علاقائی -خیبرپختون خواہ -پشاور -