"اسلام آباد میں ایک نئی سازش گھڑی جارہی ہے"شاہ محمود قریشی کا خطاب

"اسلام آباد میں ایک نئی سازش گھڑی جارہی ہے"شاہ محمود قریشی کا خطاب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ڑلاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) کے نائب چئیر مین شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ اسلام آباد میں الیکشن کمیشن آف پاکستان میں ایک نئی سازش گھڑی جارہی ہے جس کو میں قوم کے سامنے بے نقاب کرنے آیا ہوں۔
لاہور گریٹر اقبال پارک کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس تاریخی پنڈال میں دو تاریخی حوالے دینا چاہتا ہوں اور ایک تاریخی فیصلہ سننا چاہتا ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ یہ وہ پنڈال ہے جہاں1940میں قائد اعظم محمدعلی جناح نے ہندوستان کے مسلمانوں کو دعوت دی تھی ،ایک خواب دیکھایا ،ایک قرار داد یہاں پاس ہوئی تھی اور ہندوستان کے مسلمانوں نے  ایک انہونی کو کر دیکھایا اور جو سیاسی پنڈت نہیں سمجھتے تھے ان کو کر کے دیکھا یااپنے عزم سے،اور کہا کٹ کر رہے گا ہندوستان بن کر رہے گاپاکستان ۔تحریک انصاف کے نائب چئیر مین نے کہا کہ یہی آج جس کو اقبال پارک کہتے ہیں یہ منٹو پارک  کہلاتا تھا 27رمضان کو پاکستان آزاد ہوا۔قائد اعظم کی ولولہ انگیز  قیادت میں 7سال کی قلیل مدت میں انہوں نے آپ سے کیا ہوا وعدہ وفا کر دیااورایک آزاد خداد مملکت پاکستان حاصل کر کے دی ہے۔یہاں ایک دعوت آپ کو عمران خان نے دی تھی 30اکتوبر 2011کو جب تحریک انصاف کا یہ جلال تھا اور نہ ہی جو بن تھا کہ جو اب حد نگاہ تک دیکھائی دے رہا ہے ۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ میرے دوستوں عمران خان نے کیاکہا انہوں نے کہا کہ میرے پاکستانیوں تم عرصہ دراز سےتقسیم ہو ،ایک جاتا ہے وہ آتا ہے،کوئی جا رہا ہے کوئی آ رہا ہے ،یہ باریاں لے رہے ہیں،ملک تنزلی کی طرف جا رہاہےاور ان کی تجوریاں بھرتی چلی جا رہی ہے۔عمران خان نے کہا تھا کہ  اگر پاکستان کو اس بھنور سے نکالنا ہے آو میرے ساتھ وعدہ کرو گے     کہ ہم اس دو جماعتی سسٹم کو شکست دیں گے  اور ایک تیسری قوت ابھرے گی اور اس کا نام  ہو گا پاکستان تحریک انصاف ۔انہوں نے کہا کہ سات سال کی قلیل مدت میں آپ نے اپنے ولولے سے اپنے جذبے سے ان دونوں جماعتوں کو شکست دے کر  اور 2018کے الیکشن میں اللہ تعالی نے  پی ٹی آئی کو کامیابی دی تھی۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستانیوں جس جماعت کو آپ نے پانچ سال کا مینڈیٹ دیا کیا اس سازشی ٹولے نے اس کو پورا ہونے دیا؟جبکہ ن لیگ  نےاپنی کرپشن کے باوجوداپنا دور حکومت  مکمل کیا ۔کیا پانچ سال کی مدت پوری کرنا عمران خان کا حق تھا کہ نہیں؟تحریک انصاف کے نائب چئیر مین کا کہنا تھا کہ سازش لگ گئی ،سودے ہوئے،ضمیر بک گئے اور ایک ایسے قائد کو فارغ کر دیا گیا جس نے  ڈٹ کر کورونا کا مقابلہ کیا ،معیشت کو سنبھالا دیا ۔آج تیسری مرتبہ آپ اس پنڈال میں اس تاریخی حوالے کو لے کر آئے ہیں آج آپ نے فیصلہ کرنا ہے کہ  آپ کے مستقبل کا فیصلہ کیا ہو گا؟آج آپ نے فیصلہ کرنا ہے کہ غلام بن کر رہنا ہے یا آزاد قوم بن کرسر اٹھا کر جینا ہے؟آج آپ نے فیصلہ کرنا ہے کہ پاکستان کے  مستقبل کے فیصلے اسلام آباد میں ہوں گے یاکے واشنگٹن میں؟

شاہ محمود کا کہنا تھا کہ آج آپ نے کاغذی آزادی حاصل کر لی  ہے،لیکن آج آپ نے حقیقی آزادی حاصل کرنے کا عزم کرنا ہے۔کیا اس کرپٹ نظام سے آزادی چاہتے ہو؟کیا نا انصافی سے آزادری چاہتے ہو؟کیا غربت سے آزادی چاہتے ہو؟آئی ایم سے آزادی چاہتے ہو؟کیا فرقہ واریت سے آزادی چاہتے ہو؟اگر ان تمام سوالوں کا جواب ہاں میں ہے تو  حقیقی آزادی کا عزم لے کرپھیل جاو پورے پاکستان میں،پاکستان کے ہر شہر میں ہر صوبے میں ۔انہوں نے کہا کہ نئی  کابینہ میں حلف اٹھانے والوں میں سے آدھے ضمانتوں پر رہا ہیں۔کیا یہ پاکستان کو قیادت فراہم کر سکتے ہیں؟ان کاکہنا تھا کہ اس تاریخی پنڈال میں ایک نئی سازش جو گھڑی جارہی ہے میں اس  سازش کو عوام کی کچہری میں بے نقاب  کرنا چاہتا ہوں۔الیکشن کمیشن پاکستان میں ایک سازش گھڑی جارہی ہے ،فارن فنڈنگ کی سازش گھڑی جا رہی ہے،تحریک انصاف نے سب سوالوں کا جواب دے دیا ہے۔ہم حساب دینے کو تیار ہیں کیونکہ ہمارا دامن صاف ہے۔لیکن ن لیگ اور پیپلز پارٹی کا بھی حساب ہونا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک نئی سازش کے ذریعے عمران خان کو ناہل کرنا چاہتے ہیں اور تحریک انصاف پر پاپندی لگانا چاہتے ہیں۔تحریک انصاف کے نائب چئیر میں کا کہنا تھا کہ یہ لوگ کہتے تھے عمران خان نے خود کو تنہا کر لیا ہے تو میں ان سے کہنا چاہتا ہوں کہ یہ مجمع دیکھو کیا عمران تمہیں تنہا نظر آ رہا ہے۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ قوم مطالبہ کرتی ہے کہ جلد سے جلد نئے انتخابات کروائے جائیں۔

مزید :

قومی -