سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں مسجد نبویؐ میں موجود یہ بزرگ کون ہیں؟ حقیقت سامنے آ گئی 

سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں مسجد نبویؐ میں موجود یہ بزرگ کون ہیں؟ حقیقت ...
سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں مسجد نبویؐ میں موجود یہ بزرگ کون ہیں؟ حقیقت سامنے آ گئی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )سعودی میڈیا پر پچھلے کچھ روز سے سفید پوش نورانی چہرے والے ایک بزرگ شخص کی ویڈیو بہت تیزی سے وائرل ہو رہی ہے جس میں وہ مسجد نبویﷺ میں چلتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں اور زیارت میں مصروف ہیں ، ان کے بارے میں اب وہ معلومات سامنے آ گئیں ہیں جسے جاننے کیلئے ہر کوئی بے چین ہے ۔

تفصیلات کے مطابق ساجد عثمانی نامی ٹویٹر صارف نے پیغام جاری کرتے ہوئے ان بزرگ کی تصاویر شیئر کی اور ساتھ لکھا کہ ”ان بزرگ کے بارے میں عرب لوگ کہہ رہے ہیں کہ ان کی داڑھی ، پگڑھی ، عصااور چادر لینے کا انداز اور سادگی ایسی ہے کہ جیسے یہ بزرگ صحابہ کرام کے دور سے لوٹ کر آئے ہوں ۔“


تاہم جیسے ہی یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونا شروع ہوئی تو ہر کسی نے اظہار خیال کیا اور اسی دوران ایک پیغام ایسا بھی آیا جس میں بتایا گیا کہ ان بزرگوار شخصیت کا تعلق پاکستان سے ہے ۔
سوشل میڈیا پر جاری پوسٹ میں ان بزرگ شخصیت کا تعارف اور عمرہ کے بارے میں تفصیلات بتائی گئی ہیں ، جس میں کہا گیاہے کہ” 20 اپریل 2023کو آل پاکستان مری اتحاد سعودی عرب صدر رئیس عبدالر حمن مہمندائی مری نے حاجی عبدالقادر  مری ، حاجی عبدالستار جیلانی مری سے ملاقات کی ،اس کے بعد رئیس عبدالرحمن نے سعودی عرب میں وائرل ہونے والے شخص حاجی عبدالقادر مری اور عبدالستار مری کو عمرہ کی سعادت حاصل کرنے پر مبارک باد پیش کی ، اس کے بعد اپنی نگرانی میں انہوں نے حاجی عبدالقادر مری کو واپس ملک پاکستان جانے کیلئے جدا ایئر پورٹ کیلئے رخصت کیا ۔“

ایک اور ٹویٹر صارف نے ان بزرگ شخصیت کا تعارف کرواتے ہوئے کہا کہ ’’چند سیکنڈ کی ویڈیو کلپ سے عرب میڈیا پر وائرل ہونے کہ بعد دنیا بھر میں مشہور ہونے والے بزرگ کا نام عبدالقادر مری ہے جن کا تعلق پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے شہر ’’حب‘‘ سے ہے۔۔ یہ بھی اطلاع ہے کہ یہ آج صبح سویرے مدینہ سے کراچی ایئرپورٹ پہنچیں گے۔‘‘

آصف رزاق نامی ٹویٹر صارف کا کہناتھا کہ ” ماشاءاللہ ، ویڈیو دیکھی ایسا لگ رہاہے پاکستانی بلوچی ہیں، سادہ اور خلوص کے ساتھ حاضری کیلئے آئے ہوئے ہیں، کچھ حیران بھی ہیں“۔