کراچی سے لاپتہ طالبہ کا رحیم یار خان میں نکاح کرائے جانے کا انکشاف، کیا کہہ کر گھر سے باہر نکلی تھی ؟ تفصیلات سامنے آگئیں

کراچی سے لاپتہ طالبہ کا رحیم یار خان میں نکاح کرائے جانے کا انکشاف، کیا کہہ ...
کراچی سے لاپتہ طالبہ کا رحیم یار خان میں نکاح کرائے جانے کا انکشاف، کیا کہہ کر گھر سے باہر نکلی تھی ؟ تفصیلات سامنے آگئیں

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی (ویب ڈیسک) کراچی کے علاقے عباس ٹاؤن سے لاپتا آٹھویں جماعت کی طالبہ اسما کا رحیم یارخان میں زبردستی نکاح کرائے جانے کا انکشاف ہوا ہے، اہل خانہ کا کہنا ہے کہ اسما عید کے دوسرے روز سہیلی سے ملنے گئی مگر اب تک واپس نہیں آئی۔ ایف آئی آر سچل تھانے میں درج ہے۔

 آج نیوز کے مطابق تفتیشی پولیس کا کہنا ہے کہ محکمہ داخلہ کی اجازت کے بغیر پنجاب میں بچی کی بازیابی کے لیے نہیں جا سکتے محکمہ داخلہ اجازت دیں گے تو پنجاب جا کر بچی کو بازیاب کرایا جائے گا۔بچی کی عمر کے حوالےسے تفتیشی افسر کا کہنا تھا کہ بچی کی عمر کے متعلق تضاد ہیں ، بچی کا بیان ریکارڈ کرنے کے بعد ہی معلوم ہو سکے گا کہ اس نے پسند کی شادی کی یا زبردستی نکاح کیا گیا ، 15 برس کی عمر میں بچی کا نکاح سندھ میں قانون کے خلاف ہے۔

  رحیم یار خان کی مقامی پولیس نے بتایا ہے کہ بچی نے اپنی مرضی کے نکاح کے متعلق بیان دیا ہے ، اسماء نے رحیم یار خان میں اپنے نکاح نامے میں 19 برس عمر لکھوائی ہے جبکہ متاثرہ بچی کی والدہ کے مطابق بچی کی عمر 14 15 سال کے درمیان ہے اور آٹھویں جماعت کی طالبہ ہے۔دوسری جانب اہل خانہ کا کہنا ہے کہ سچل پولیس نے لڑکی کی بازیابی کے لیے فوری طور پر خاطر خواہ اقدامات نہیں کیے۔ علاقے میں پانی سپلائی والےآصف پر اسما کو بہلا پھسلاکر لے جانے کا شک ہے۔آصف کے بڑے بھائی غلام شبیر نے تسلیم کیا ہے کہ اسما کو آصف رحیم یار خان لے گیا ہے،  غلام شبیر کو اسما کے اہل خانہ نے پولیس کے حوالے کیا تھا۔ پولیس نے پوچھ گچھ کے بعد بشارت کی ضمانت پر چھوڑ دیا۔

اسما کے اہلِ خانہ نے بتایا کہ انہوں نے جس دن غلام شبیر کو پکڑا اسی دن اس کے والد نے فون پر رابطہ کیا اور اسما سے بات بھی کروائی۔ انہوں نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ اسما محفوظ ہاتھوں میں نہیں، پولیس اس کیس میں ملوث افراد کو گرفتار کرکے بیٹی کو بازیاب کروائے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ایف آئی آر میں آصف کے بھائی غلام شبیر کا نام شامل نہیں، غلام شبیر رکشہ چلاتا ہے۔ سچل پولیس کا کہنا ہے کہ آصف کی گرفتاری اور اسما کی بازیابی کے لیے پولیس پارٹی رحیم یار خان بھیجی جائے گی، محکمہ داخلہ سے اجازت لی جارہی ہے۔