ہڈی جوڑ پہلوانوں کے آرتھو پیڈک سینٹر دوبارہ کھل گئے

ہڈی جوڑ پہلوانوں کے آرتھو پیڈک سینٹر دوبارہ کھل گئے

  

                              لاہور(جاویداقبال )محکمہ صحت کی طرف سے صوبائی دارلحکومت میں ہڈی جوڑ پہلوانوں کے بند کروائے گئے جعلی آرتھو پیڈک سینٹر دوبارہ کھل گئے ہیں جبکہ دوسری طرف گزشتہ تین ماہ کے دوران سیل کئے گئے عطائی ڈاکٹروں کے 4270کلینکس بھی ڈرگ انسپکٹروں کی ملی بھگت سے دوبارہ ڈی سیل ہوگئے ہیں اور جہاں عطائیوں نے سادہ لوح مریضوں کی زندگیوں سے دوبارہ کھیلنا شروع کردیا ہے ان جعلی سینٹروں کو مختلف ہسپتالوں سمیت مختلف سرکاری محکموں میں تعینات نائب قاصد ،کلرکس ،الیکٹریشن ،ٹیکنیشن اور ڈسپینسر ڈاکٹر بن کر چلا رہے تھے جنہیں ای ڈی او ہیلتھ لاہور اور ڈی سی او لاہور کی مختلف ٹیموں نے مختلف اوقات میں چھاپے مار کر سیل کیا تھا ان میں سے 2700کلینکس کو سیل کیا گیاتھا جبکہ باقی 1570کے چالان کئے گئے تھے ذرائع کا کہنا ہے اکثریت سًے ڈرگ انسپکٹروں نے مک مکا کرلیا اور انہیں ڈی سیل کروانے کے طریقے بتائے واہگہ ٹاﺅن کے ڈی ڈی ایچ او نے ڈرگ انسپکٹروں کے ہمراہ 1384جعلی اور عطائی ڈاکٹروں کے کلینک سیل کئے جن میں 370یونانی اور حکیموں کے کلینکس سیل کئے بعدازاں خود ہی ڈی سیل کردیئے اسی طرح دیگر ٹاﺅنوں میں بھی تین ماہ چلائے جانے والی مہم اس وقت ناکام ہوگئی جب تمام کے تمام سیل کئے جانے والے کلینکس کھول دیئے گئے اسی طرح ڈی سی او لاہور کی ٹیموں نے شہر بھر میں جعلی آرتھو پیڈک سرجنوں جو درحقیقت پہلوان تھے کے سینکڑوں مقامات پر دکانوں نما کلینکس سیل کئے جنہیں بھی دوبارہ کھول دیا گیا ہے اور انہیں دوبارہ سے دھندہ شروع کردیا ہے یہ پہلوان نہ تجربہ کاری کے باعث لوگوں کی ٹانگیں اور بازو مفلوج کررہے ہیںاس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلمان نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس صورتحال کا نوٹس لیا جائے گا ای ڈی او ہیلتھ اور ڈی سی او کی مانیٹرنگ ٹیم سے جواب طلبی کی جائے گی اور جو بھی ذمہ دار ہوا اس کے خلاف ضابطہ کی کارروائی عمل میں لائی جائے گی انہوں نے کہا کہ حکومت کسی عطائی کو سادہ لوح مریضوں کی زندگی سے کھیلنے کی اجازت ہرگز نہیں دے سکتی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -