حکومت ، تحریک انصاف اور عوامی تحریک کو مفاہمت کی راہ اپنانی چاہیے ، سیاسی رہنما

حکومت ، تحریک انصاف اور عوامی تحریک کو مفاہمت کی راہ اپنانی چاہیے ، سیاسی ...

  

                              لاہور(محمد نواز سنگرا//انوسٹی گیشن سیل)با مقصد مذاکرات سے دھرنے ختم ہو جائیں گے حکومت ،تحریک انصاف اور عوامی تحریک کو مفاہمت کی راہ اپنانی چاہیے۔لانگ مارچ اور دھرنوں سے جمہوریت مضبوط ہو گی اور عام آدمی کو حق مانگنے میں آسانی ہوگئی ہے۔ان خیالات کا اظہار ملک کے سیاسی رہنماو¿ں نے روز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔پیپلز پارٹی کے رہنما یوسف تالپور نے کہا کہ شاہ محمود قریشی کے گھر پر دھاوے کیوجہ سے تحریک انصاف مذاکرات سے انکار کر رہی ہے۔عمران خان نے موقع ضائع کیا تو ان کا بڑا نقصان ہو گااور جو دھرنے دیئے جا رہے ہیں اس سے ملک اور جمہوریت کا نقصان ہو رہا ہے۔مسلم لیگ (ق)کے رہنما کامل علی آغا نے کہا کہ حکومتی رویے سے تنگ ہو کر عوام اپنا حق مانگنے کےلئے سڑکوں پر نکلی ہے ۔مذاکرات میں حرج نہیں لیکن حکومت کو قربانی ضرور دینی پڑے گی۔مسلم لیگ (ن)کے رہنما ارمغان سبحانی نے کہا کہ عوام کو سڑکوں پر لانے کی روایت بہت غلط ہے جو ملک اور جموریت کےلئے اچھی نہیں ہے۔حکومت مکمل کوشش کر رہی ہے بات چیت کے ذریعے جلد مسائل کا حل نکال لیا جائے گا۔تحریک انصاف کے رہنما اعجاز چوہدری نے کہا کہ ملک میں جمہوریت کے نام پر عوام کے حقوق پر ڈاکہ ڈالا جا رہا ہے۔نواز شریف کو وزیر اعظم رہنے کا حق نہیں رہا،وزیر اعظم کے استعفے کے بعد ہی با مقصد مذاکرات شروع ہوں گے۔جماعت اسلامی کے رہنما امیر العظیم نے کہا کہ اسلام آباد میں اعصاب کی جنگ ہے جس سے خطرات اور خدشات سر اٹھا رہے ہیں مطالبات ہر شخص کا حق ہے عمران خان کو بھی لچک دیکھاتے ہوئے نیا ایجنڈا دینا ہو گا۔پاکستان کی حکومتیں فارغ البال ہو تی ہیں ملک میں جمہوریت ایلیٹ طبقے کے ہاتھوں یر غمال بنی ہوئی ہے۔لانگ مارچ اور دھرنے سے ہر آدمی کو اپنا حق مانگنے میں آسانی ہو گی۔

سیاسی رہنمائ

مزید :

صفحہ آخر -