انقلاب مارچ سے اظہار یکجہتی ،سندھ میں(ق) لیگ کے کارکنوں پر مقدمہ

انقلاب مارچ سے اظہار یکجہتی ،سندھ میں(ق) لیگ کے کارکنوں پر مقدمہ

  

لاہور( جنرل رپورٹر) انقلاب مارچ سے اظہار یکجہتی سندھ میں مسلم لیگ(ق)کے کارکنوں پر پہلی ایف آئی آر درج۔ شاہ لطیف تھانہ قائد آبادملیر میںمسلم لیگ ملیر کے صدر نعیم عادل شیخ سمیت 150 کارکنوں کو مقدمے میں نامزد کیا گیا۔مقدمے میں مبینہ طور پر ہوئی فائرنگ،جلاﺅ گھیراﺅ کی مختلف دفعات لگائی گئیں۔گزشتہ روز انقلاب مارچ کی کال پر مسلم لیگ(ق) کے کارکنوں نے قومی شاہراہ پر پرامن دھرنا دیا تھا۔ پرشاہ لطیف تھانہ می ملیرمیں مقدمہ نمبر 387/2014 درج کیا گیا۔مبینہ طور پرمقدمے میں ہوائی فائرنگ، جلاﺅ گھیراﺅ کی مختلف دفعات لگائی گئیں۔ ملیر کے صدرنعیم عادل شیخ ،ملیر میں یوتھ ونگ کے صدر رانا زوالفقار،سابق ناظم ملیر راﺅ صالح سمیت 150 عہدیداران اورکارکنوں پر مقدمہ درج کرنے پر PAT سندھ کے رہنماﺅں اور انقلاب مارچ کی اتحادی جماعتوں نے بھی اس عمل کو سندھ حکومت کی بزدلانہ کارروائی قراردیا ہے ۔مسلم لیگ (ق)کے مرکزی رہنما چوہدری شجاعت حسین اور چوہدری پرویز الہی نے حلیم عادل شیخ سے واقعہ کی اطلاع ملنے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے کارکنان کو ملک بھر میں پرامن کارکنوں کے نام سے پہچانا جاتا ہے۔ وزیر اعظم کو استعفے ہر حال میں دینا ہوگا یہ لوگ انتقامی کاروائیوں پر اتر آئے ہیں وزیر اعظم اگر عوام کے منتخب نمائندے ہوتے تو آج اس طرح عوام سڑکوں پر نہ ہوتی۔ انہوں نے سندھ میں موجود لیگی کارکنوں پر گزشتہ روز پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج اور ہوائی فائرنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کی جبکہ 150 سے زائد کارکنوں پر بے بنیاد الزامات لگا کر مقدمہ درج کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کی۔

مقدمہ

مزید :

صفحہ آخر -