لاہور ہائیکورٹ بار کا مارچوں کیخلاف وکلاءتحریک چلانے کا اعلان ، آل پاکستان وکلاءکنونشن آج ہو گا

لاہور ہائیکورٹ بار کا مارچوں کیخلاف وکلاءتحریک چلانے کا اعلان ، آل پاکستان ...

  

                                          لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے عہدیداروں نے عمران خان اور طاہر القادری کے مارچوں کو یکسر مستر د کرتے ہوئے نئی وکلاءتحریک چلانے کا اعلان کر دیا ہے ۔اس حوالے سے تمام بار ایسوسی ایشنوں کو اعتماد میں لینے کے لیے آج صبح 11 بجے آل پاکستان وکلاءکنونشن طلب کرلیا گیا ہے ۔ لاہور ہائیکورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر شفقت محمود چوہان ، سیکرٹری میاں احمد چھچھر ، لاہور بار کے نائب صدر لبیب ظفر اور پنجاب بار کونسل کے رکن رائے بشیر احمد گزشتہ روز لاہور ہائیکورٹ بارکے کراچی شہدا ہال میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شیروانیاں سلوا کررول آف لاءکی خلاف ورزی کرنے والوں کا راستہ روکیں گے ۔ نواز شریف کو آگاہ کردیا ہے کہ آئین کی حکمرانی کے لئے وکلاءبرادری ان کے ساتھ ہے وہ کسی بھی دباﺅ کو خاطر میں نہ لائیں اور استعفیٰ ہر گز نہ دیں ۔صدر ہائی کورٹ بارشفقت چوہان نے کہا کہ پاکستان کی موجودہ صورت حال کے پیش نظر ، قانون کی حکمرانی ، آئین کی بالادستی کے لیے وکلاءکا یہ فرض ہے کہ ملک کے نظام کو جس طرح لپیٹنے کی بات کی جارہی ہے ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں اور کسی بھی غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام کے خلاف بار ایسوسی ایشنیں سیسہ پلائی دیوار بن جائیںگی ۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے تمام بار ایسوسی ایشنوں کو اعتماد میں لینے کے لیے آج صبح 11 بجے آل پاکستان وکلاءکنونشن پوری طاقت کے ساتھ منعقد کر رہے ہیں انہوں نے کہاکہ ہم قانون کی بالا دستی ، آئین کی حکمرانی ، اور جمہوریت کو برقرار رہنے کی بات کر رہے ہیں ہم کسی بھی شخص واحد کی بات نہیں کر رہے ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ملک کے باقاعدہ الیکشن کے تحت آنے والے وزیر اعظم سے استعفیٰ طلب کیا جا رہا ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہمارا کسی سیاسی جماعت سے کوئی تعلق نہیں ہے لیکن اگر کبھی قانون اور آئین کی خلاف ورزی کی گئی تو وکلاءپیچھے نہیں ہٹیں گے انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے آج باقاعدہ وکلاءکنونشن میں تمام صورت حال پر لائحہ عمل طے کیا جائے گا ۔ اس موقع پر لاہور ہائی کورٹ بار کے سیکرٹری میاں احمدچھچھر ایڈووکیٹ نے کہا کہ ملکی سیاست کے حالات جس نہج پر پہنچ چکے ہیں اور نازک حالات میں وکلاءبرادری اپنا مثبت آئینی اور قانونی کردار ادا کریں گے یہ ہماری بطور پاکستانی فرض بھی ہے انہوں نے کہا کہ ملکی عوام کو ان لوگوں کو جو جمہوریت پامال کرنا چاہتے ہیں انہیں یہ غلط کام نہیں کرنے دیں گے انہوں نے کہا کہ ایک نابلد بچے کو جسے پٹرول کے ٹرک پر بٹھا دیا جائے او ر اس کے ہاتھ میں ماچس تھما دی جائے تو کیا بعید ہے کہ کیا ہو گا اس لیے ضروری ہے کہ تمام تر معاملات کو فہم و فراست کے ساتھ دیکھا جائے اور وکلاءکے ماضی کے کردار کو سامنے رکھتے ہوئے بھر پور کردار ادا کیا جائے ۔

اعلان

مزید :

صفحہ آخر -