تحریک انصاف پنجاب کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس، استعفے محمود الرشید کے حوالے

تحریک انصاف پنجاب کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس، استعفے محمود الرشید کے حوالے

  

لاہور(نمائندہ خصوصی ) تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی پنجاب کا ہنگامی اجلاس اسلام آباد میں پارلیمانی لیڈر میاں محمود الرشید کی زیر صدارت منعقد ہوا ، اجلاس میں تمام اراکین اسمبلی نے اپنے استعفے میاں محمود الرشید کے حوالے کر دیے اور کہا کہ حقیقی جمہوریت کی بحالی کیلئے جو قربانی بھی مانگی گئی اس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے اور اراکین صوبائی اسمبلی نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی قیادت پر بھرپور اظہار کا اعتماد کیا اور اظہار یکجہتی کیا، پارلیمانی پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں محمود الرشید نے کہاموجودہ ناقابل اصلاح وزیراعظم کے ساتھ عوام اور کوئی ادارہ نہیں چل سکتا، پولیس اور سول ایڈمنسٹریشن کی طرف سے بغاوت کی خبریں ملنے کے بعد حکومت نے سرنڈرکیا، وزیراعظم کس پارلیمنٹ کی بات کرتے ہیں جس میں وہ خود بھی جانا پسند نہیں کرتے؟، ڈرائنگ روم اور ڈیل کے الفاظ عمران خان کی سیاسی ڈکشنری میں شامل نہیں، اب جو ہو گا کھلے میدان میں ہو گا ،ملکی تاریخ کی یہ پہلی عوامی احتجاجی تحریک ہے جس کی بھاگ دوڑ سیاسی لیڈر شپ کے ہاتھ میں ہے، زمان پارک سے ریڈزون میں داخل ہونے تک کے سفر نے ثابت کردیا ہم پرامن جمہوری لوگ ہیں، میاں محمود الرشید نے کہا کہ سات دن میں عمران خان کو ایک مضبوط اعصاب والے پرعزم قومی رہنما کے طور پر پایا، تحریک انصاف کے کارکن سیاسی تاریخ کا قابل فخر باب رقم کر رہے ہیں وہ اپنے رویوں سے ثابت کر رہے ہیں کہ وہ حقیقی جمہوریت کے قیام اور ہر طرح کے استحصال کے خاتمہ کے لیے بڑی سے بڑی قربانی کیلئے تیار ہیں، انہوں نے کہا کہ عمران خان 19 کروڑ عوام کا مقدمہ لڑرہے ہیں،آزادی اور انقلاب مارچ میں چاروں صوبوں کے تاجر، کلرک ، کسان ، مزدور، خواتین، نوجوان، سابق فوجی اور اقلیتیں شامل ہیں، اس مارچ میں مدرسوں، خانقاہوں کے ساتھ ساتھ کالجز اور یونیورسٹیوں کی بھی بھرپور نمائندگی ہے، ہمارا ایک ہی مطالبہ ہے کہ دھاندلی کی پیداوار حکومت رخصت ہو اور عوام کو حقیقی حکومت منتخب کرنے کا موقع ملے۔

مزید :

صفحہ اول -