ماورائے آئین اقدام کیس ،اٹارنی جنرل کی دھرنے کیخلاف حکم یا آبزرویشن جاری کرنیکی درخواست مسترد

ماورائے آئین اقدام کیس ،اٹارنی جنرل کی دھرنے کیخلاف حکم یا آبزرویشن جاری ...
 ماورائے آئین اقدام کیس ،اٹارنی جنرل کی دھرنے کیخلاف حکم یا آبزرویشن جاری کرنیکی درخواست مسترد

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) سپریم کورٹ نے ماورائے آئین اقدام کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل کی جانب سے دھرنے کیخلاف حکم یا آبزرویشن جاری کرنے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے سماعت کل تک کے لیے ملتوی کر دی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے پانچ رکنی لارجر بنچ نے سپریم کورٹ بارکے صدرکامران مرتضیٰ، اسلام آباد، لاہوراورملتان ہائیکورٹ بارزاورڈسٹرکٹ بار کراچی کی طرف سے دائرکی گئی درخواستوں کی سماعت کی ۔ سماعت کے موقع پر تحریک انصاف کے سر براہ عمران خان کی جانب سے حامد خان ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے تاہم عوامی تحریک کے سر براہ طاہر القادری کی جانب سے کوئی وکیل پیش نہ ہوا جس پر عدالت عظمی نے برہمی کا اظہار کیا۔ اس موقع پر اٹارنی جنرل سلمان اسلم بٹ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عوامی تحریک حالات خراب کر رہی ہے،عدالت کوئی حکم جاری کرے۔ چیف جسٹس ناصر الملک نے ریمارکس دئیے کہ انتظا می معاملات حکومت کا کام ہے ، کوئی حکم جاری نہیں کرسکتے۔ اس پر اٹارنی جنرل نے استدعا کی کہ عدالت کوئی آبزرویشن ہی دے دے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ ہم اس بارے میں کچھ نہیں کہیں گے۔ تحریک انصاف کے وکیل حامد خان دلائل دیے کہ تحریک انصاف ایک پر امن جماعت ہے، ہم ہر طرح کے غیر آئینی اقدامات کے خلاف ہیں۔ حامد خان نے تحریری جواب داخل کرنے کی مہلت مانگی جس پرسپریم کورٹ تحریری جواب جمع کرانے کیلئے کل تک کی مہلت دیتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -